Hot Masala Board - Free Indian Sex Stories & Indian Sex Videos. Nude Indian Actresses Pictures, Masala Movies, Indian Masala Videos

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator


Go Back   Hot Masala Board - Free Indian Sex Stories & Indian Sex Videos. Nude Indian Actresses Pictures, Masala Movies, Indian Masala Videos > Urdu Sex Stories - Urdu font sex stories, urdu kahani, urdu sex kahani

Reply
 
Thread Tools Display Modes
  #101  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
goldfish goldfish is offline
Senior Member
 
Join Date: Dec 2007
Posts: 282,110
Default سالی: پورے گھر والی

رضوان نے مجھے گھر چھوڑا اور کچھ دیر بیٹھنے کے بعد واپس چلا گیا۔ دن گزرتے گئے اور رضوان گاہے بگاہے گھر آتا رہتا۔ اسکو جب بھی موقع ملتا وہ مجھے پکڑ لیتا اور کسنگ شروع کر دیتا، میرے ممے دباتا، شلوار میں ہاتھ بھی ڈالتا اور چوتڑوں کو بھی دباتا۔ مگر ابھی تک میں نے اسکو اپنے ممے نہیں دکھائے تھے اور نہ ہی چوت اور گانڈ دکھائی تھی۔ البتہ جیسے ہی تھوڑا سا بھی موقع ملتا وہ اپنا لن نکال کر میرے سامنے کر دیتا اور میں اسکو قلفی سمجھ کر منہ میں لیتی اور دل بھر کر اسکے چوپے لگاتی۔ اسکے ٹٹوں سے کھیلتی انکو منہ میں لیتی اور چوپے لگا لگا کر اسکے لن کا جوس نکال دیتی۔

اب گرمیوں کے دن تھے اور میرا کالج بھی بند تھا تو دوستوں سے ملنا جلنا بھی کم ہوگیا تھا۔ سارا دن گھر میں بیٹھی بور ہتی رہتی تھی۔ ایک دن جب رضوان ہمارے گھر آیا ہوا تھا تو میرے کالج کی دوست سائرہ بھی گھر آگئی۔ سائرہ کا تعلق بہت امیر گھرانے سے تھا۔ وہ ہمیشہ گاڑی میں کالج آتی تھی کالے رنگ کی مرسڈیز چمکتی ہوئی جب کالج گیٹ کے سامنے رکتی تو ڈرائیور فوری سے پہلے اترتا اور سائرہ کے لیے دروازہ کھولتا سائرہ کسی مہارانی کی طرح گاڑی سے نکلتی اور ڈرائیور گاڑی کا دروازہ بند کر کے گاڑی واپس لے جاتا اور جب سائرہ نے واپس جانا ہوتا تو وہ ڈرائیور کو کال کرتی اور ڈرائیور جھٹ سے گاڑی لے کر کالج کے گیٹ کے سامنے پہنچ جاتا۔ سائرہ کافی حد تک مغرور لڑکی تھی اور لڑکوں سے فلرٹ کرنا اسکا شوق تھا۔ مگر کسی بھی لڑکے کو وہ ضرورت سے زیادہ فری نہیں ہونے دیتی تھی۔ وہ یہ چاہتی تھی کہ وہ ہر لڑکے کو اپنی مرضی سے ٹریٹ کرے۔ جب سائرہ چاہے اسکے ساتھ فلرٹ کرے اور جب چاہے اسکو کسی جوتی کی طرح اتار کر سائڈ پر پھینک دے۔ وہ اپنے حسن کے جلوے دکھا کر لڑکوں کو گرماتی تھی مگر کبھی اپنا جسم کسی لڑکے کے حوالے نہیں کیا تھا۔ کالج میں اسکی دوستی میرے ساتھ بھی اتفاق سے ہوگئی کالج کا پہلا دن تھا اور وہ کلاس روم میں آئی تو اسکو میرے ساتھ والی سیٹ ہی خالی ملی۔ اور اکثر وہ اسائنمنٹ بھی میری ہی کاپی کرتی تھی اس لیے اس کی میرے سے دوستی ہوگئی۔

سائرہ پہلے بھی بہت بار ہمارے گھر آچکی تھی مگر یہ اسکا بڑا پن تھا کہ اسنے کبھی گھر آتے ہوئے ہچکچاہٹ محسوس نہیں کی تھی اور کوئی نخرہ نہیں کیا تھا۔ لیکن میں اسکے گھر کبھی نہیں گئی تھی۔ اسکا ڈرائیور اسے چھوڑ کر واپس چلا گیا تھا۔ سائرہ آتے ہی مجھ سے گلے ملی پھر امی سے ملی اور رضوان پر نظر پڑی تو اسنے میری طرف سوالیہ نظروں سے دیکھا کہ یہ کون ہے تو میں نے رضوان کا تعارف کروایا۔ سائرہ رضوان سے بھی بڑی زندہ دلی سے ملی اور آگے بڑھ کر ہاتھ ملایا۔ میں سائرہ کے لیے چائے بنا کر لائی اور ساتھ میں نمکو اور بسکٹس وغیرہ رکھے۔ دوپہر کا ٹائم تھا تو سائرہ نے بتایا کہ اسکی بھابھی بھی آئی ہوئی ہے اور اس نے مجھے دعوت دی کہ میں اسکے گھر چلوں اسکی بھابھی سے بھی ملوں۔ میں تو پہلے ہی اسکا گھر دیکھنا چاہتی تھی اس نے آج تک کبھی دعوت ہی نہیں دی تھی۔ میں نے فورا حامی بھری اور امی سے اجازت مانگی تو امی نے کہا کہ اپنے ابو سے فون کرکے پتا کر لو۔ یہ کام میں نے سائرہ کو کہا، سائرہ نے میرے موبائل سے ابو کو فون کیا اور اپنی خواہش کا اظہار کیا۔ ابو پہلے سائرہ سے بہت بار مل چکے تھے اور جانتے تھے لہذا ابو نے کوئی اعتراض نہیں کیا۔ لیکن ساتھ میں یہ بھی پوچھا کہ جاو گی کیسے اور فائزہ کی واپسی کیسے ہوگی؟ تو سائرہ نے کہا کے میں ڈرائیور کو بلوا لیتی ہوں اور اسی کے ساتھ فائزہ واپس آجائے گی یا پھر رضوان بھائی بھی گھر پر ہیں تو رضوان بھائی ہمیں لے جائیں اور واپسی فائزہ کو لے بھی آئیں گے۔ ابو نے یہ بات مان لی کیونکہ ابو نہیں چاہتے تھے کہ میں کسی بھی ڈرائیور کے ساتھ اکیلی واپس آوں ۔ ابو نے رضوان کو فون کیا اور کہا کہ میرے آفس آکر اپنی موٹر سائکل مجھے دے جاو اور میری گاڑی لے جاو۔ ابو کا آفس گھر سے محض 2 کلومیٹر ہی دور تھا۔ رضوان فورا ہی آفس سے گاڑی لے آئے اور ہم 30 منٹ بعد سائرہ کے گھر کے سامنے تھے۔

سائر کا گھر کیا تھا بس ایک محل تھا۔ شہر سے باہر ایک بڑی حویلی تھی جسکا اونچا گیٹ اور گیٹ پر 2 گن مین کھڑے تھے اور اندر داخل ہوئے تو ایک بڑی سی روڈ تھی جو کم سے کم 300 میٹر لمبی تھی اور اسکے ارد گرد بڑا لان تھا جس میں درخت اور پودے لگے ہوئے تھے۔ ایسا لگ رہا تھا جیسے ہم کسی بادشاہ کے گھر آگئے ہوں۔ ایک سائیڈ پر ایک بڑا سا گیراج تھا جس میں کوئی 5 کے قریب لمبی لمبی کاریں اور لینڈ کروزر کھڑی تھیں اور انکے سامنے ہماری گاڑی کوئی کھلونا لگ رہی تھی۔ رضوان بھی یہ شان و شوکت دیکھ کر ایک دم دنگ رہ گیا تھا۔ اور میری بھی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں تھیں۔ ہم نے ایک سائڈ پر گاڑی کھڑی کی تو سائرہ ہمیں لے کر اندر چلی گئی۔ یہ ایک بڑا ہال نما کمرہ تھا جس میں صوفے رکھے تھے اور ایک سائڈ پر ڈائنگ ٹیبل رکھا تھا۔ ہمارے اندر جاتے ہی ایک پینٹ شرٹ میں ملبوس شخص دورٹا ہوا آِیا اور سائرہ کے آگے ہاتھ باندھ کر کھڑا ہوگیا اور حکم کا انتظار کرنے لگا۔ دور سے آتا ہوا تہ مجھے یہی لگا کہ یہ سائرہ کا بھائی ہوگا لیکن جس طرح سے وہ کھڑا تھا وہ ملازم تھا۔ سائرہ نے اسکو کہا کہ پہلے رضوان صاحب اور فائزہ میم کے لیے پانی لیکر آو اسکے بعد انکے لیے کھانے پینے کا بندوبست کرواو اور پانی میرے کمرے میں ہی لے آنا۔ وہ ج بی بی جی کہتا ہوا الٹے قدموں واپس چلا گیا۔

سائرہ نے ہمیں اپنے پیچھے آنے کا کہا اور اپنے کمرے کی طرف جانے لگی۔ اسکا کمرہ بھی بہت اچھے انداز میں دیکوریٹد تھا۔ کسی ماہر انٹیریر ڈیکوریٹر سے کمرہ سیٹ کروایا گیا تھا۔ ایک سائِد پر بڑے سے شیشے والی کھڑکی تھی جسکے باہر نیچے ایک سوئمنگ پول نظر آرہا تھا۔ جس میں صاف شفاف نیلا پانی نظر آرہا تھا۔ سائرہ نے ہمیں یہیں بیٹھنے کو کہا اور بولی میں بھابھی کو بلا لاوں۔ یہ کہ کر وہ باہر چلی گئی اورکچھ ہی منٹ بعد دروازے پر ناک ہوئی اور وہی ملازم ٹرے میں پانی لے کر آن کھڑا ہوا۔ اسنے ٹرے پہلے رضوان کے آگے کی اور پھر میرے آگے کی۔ اور خالی ٹرے لیکر مودب انداز میں گلاس خالی ہونے کا ویٹ کرنے لگا۔ ہم نے پانی پی کر خالی گلاس واپس رکھے اور وہ ایسے ہی واپس چلا گیا۔ کچھ ہی دیر بعد سائرہ کمرے میں داخل ہوئی تو اسکے ساتھ ایک اور لڑکی تھی جو سائرہ کی بھابھی تھی۔ سائرہ نے اس سے میرا اور رضوان کا تعارف کروایا تو وہ بڑی گرمجوشی کے ساتھ مجھ سے گلے ملی اور رضوان سے بھی ہاتھ ملایا۔ اور اس نے مجھے بتا یا کہ اسنے میرے بارے میں بہت سنا ہے سائرہ سے۔ سائرہ کی ٹوٹل 3 یا 4 ہی دوست تھیں ملتان میں جن میں سے ایک میں بھی تھی لہذا اس نے میرا تذکرہ اپنی بھابھی سے کیا تھا۔

اب سائرہ نے اپنی بھابھی کا بھی تعارف کروایا، اسکا نام سمیرا تھا۔ جی ہاں وہی سمیرا جسکا ذکر میں نے اپنی دوسری کہانی "تبدیلی آ نہیں رہی تبدیلی آگئی ہے" میں کیا تھا۔ سائرہ نے بتایا کہ سمیرا کا تعلق اسلام آباد سے ہے اور یہ اپنی چھٹیاں گزارنے ہمارے ہاں آئی ہے۔ گھر میں اس وقت ہم 4 لوگوں کے علاوہ صرف ملازم تھے۔ کچھ دیر ہم آپس میں باتیں کرتے رہے۔ بہت خوشگوار ماحول میں ہم نے وقت گزارا، رضوان کو بھِی بوریت کا احساس نہیں ہوا کیونکہ سمیرا اور سائرہ دونوں ہی بلا جھجکرضوان سے بات کر رہی تھیں اور ہم چاروں ایسے خوش گپیوں میں مصروف تھے جیسے سب ایکدوسرے کو عرصے سے جانتے ہوں۔ سمیرا خاص طور پر بہت اچھے اخلاق کی مالک تھی اور رکھ رکھاو والی لگ رہی تھی۔ کچھ دیر بعد ملازم نے آکر اطلاع دی کہ کھانا تیار ہے تو ہم چاروں نے نیچے جا کر کھانا کھایا۔ کھانا بہت ہی پر تکلف تھا اور بہت اقسام کی ڈشز میز پر موجود تھیں۔

کھانا کھانے کے بعد سائرہ نے مجھے کہا کہ چلو سوئمنگ کرتے ہیں۔ میں سوئمنگ کرنا نہیں جانتی تھی تو سائرہ نے کہا کوئی بات نہیں ہمارا پول گہرا نہیں ہے تم نہیں ڈوبتی اس میں۔ گرمی بہت ہے تو سوئمنگ پول میں نہا کر تھوڑا فریش ہوجائیں گے۔ میں نے حامی بھر لی۔ سمیرا بھی تیا ر تھی۔ مگر مسئلہ رضوان کا تھا کہ وہ اکیلا تھا۔ سائرہ نے رضوان کو کہا کہ اب کچھ دیر آپکو اکیلے بیٹھ کر بور ہونا پڑے گا۔ یا تو میرے بھائی کے کمرے میں جا کر کوئی مووی دیکھ لیں یا نیچے لان میں چہل قدمی کریں ۔ سائرہ کا بھائی گھر پر موجود نہیں تھا ابو اسکے ویسے ہی گھر پر نہیں ہوتے تھے اور امی بھی گاوں گئی ہوئیں تھیں۔ رضوان نے کہا کہ آپ بے فکر ہوکر سوئمنگ کرو میں لان میں چہل قدمی کر لوں گا۔

سائرہ نے ملازم کو بلا کر کہا کہ رضوان صاحب کو لان تک لے جاو اور ہم تینوں سوئمنگ پول کی طرف چلی گئیں۔ سوئمنگ پول کے چاروں سائڈ پر بڑی چار دیواری تھی۔ یہ چار دیواری بھِی کم و بیش 2 کنال کی ہوگی۔ اور بیچ میں ایک سوئمنگ پول تھا۔ یہ اصل میں سوئمنگ پول اور ٹیوب ویل کا مکسچر تھا۔ اس میں سوئمنگ پول کی طرح پانی کھڑا نہیں تھا بلکہ مسلسل ایک سائڈ سے پانی آرہا تھا اور دوسری سائیڈ سے پانی خارج ہو رہاتھا۔ سائرہ نے بتایا کہ یہ سارہ دن چلتا ہے اور پول میں پانی تازہ رہتا ہے۔ اور جو پانی خارج ہورہا ہے وہ حویلی کی پچھلی سائڈ پر انکی زمینوں کو سیراب کرتا ہے۔ پول کے اندر نیلے رنگ کی ٹائلز لگی ہوئیں تھیں۔ اس مٹی نام کی کوئی چیز نہیں تھی۔ پانی بالکل شفاف تھا اور نیلی ٹائل کی وجہ سے اور بھی نیلا لگ رہا تھا۔ پانی کی گہرائی تقریبا 5 فٹ سے کچھ اوپر تھی اور یہ اوپن ائیر میں تھا۔ یعنی چار دیواری تو تھی مگر چھت نہیں تھی۔ اور آس پاس دور دور تک کوئی گھر بھی نہیں تھا۔ کیونکہ انکی یہ حویلی شہر سے باہر تھی اور اور آس پاس کی ساری زمین انکی اپنی تھی۔

پول پر پہنچتے ہیں سائرہ اور سمیرا نے اپنے کپڑے اتارنا شروع کر دیے۔ دونوں نے اپنی قمیص اتاری اور پھر شلوار بھی اتار دی۔ اب دونوں محض برا اور پینٹی میں تھیں۔ دونوں نے اپنے کپڑے ساتھ پڑے ہوئے بینچ پر رکھے جس پر پہلے سے ٹاول بھی رکھے ہوئے تھے۔ سائرہ کو میں نے پہلی بار بغیر کپڑوں کے دیکھا تھا۔ وہ ایک سمارٹ اور خوبصورت لڑکی تھی۔ اسکا رنگ گورا تھا اور چکنا جسم تھا۔ جسم پر بالوں کا نام و نشان تک نہ تھا۔ اسکے ممے میرے مموں جتنے ہی تھی یعنی کہ 34 سائز تھے مگر گانڈ میرے سے چھوٹی تھی۔ سائرہ کی گانڈ 32 کی تھی اور پیٹ بھی نہ ہونے کے برابر تھا۔ اسکے مقابلے میں سمیرا کے ممے ہم دونوں سے بڑے تھے۔ 36 سائز کے مموں پر بلیک برا میں سمیرا کا دودھیا جسم قیامت ڈھا رہا تھا۔ گانڈ بھی 36 سائز کی تھی اور گوشت سے بھری ہوئی تھِی۔ میں نے ابھی تک کپڑے نہیں اتارے تھے اور حیرانگی سے ان دونوں کو دیکھے جا رہی تھی۔ مجھے ایسے اپنی طرف دیکھتے ہوئے سمیرا بولی کیا ہوا پہلے کبھی کسی ننگی لڑکی کو نہیں دیکھا؟ اور تم تو ایسے دیکھ رہی ہو جیسے کوئی لڑکا اپنی گرل فرینڈ کو ننگا دیکھ لے۔ میں اس بات پر ہنس پڑی اور کہا نہیں ایسی بات نہیں، تم دونوں سوئمنگ کرو میں باہر ہی بیٹھوں گی۔ میری یہ بات سن کر دونوں آگے بڑھیں اور کہا ایسے نہیں اتارتی کپڑے تو ہم خود اتار دیتے ہیں تمہارے کپڑے۔ اور انہوں نے میری قمیص اتارنی شروع کی میں نے ہلکا سا روکا مگر سائرہ میری قمیص اتار چکی تھی اور سمیرا میری شلوار اتار رہی تھی۔ اب ہم تینوں کے کسے ہوئے ممے برا میں تھے اور نیچے سے ہم تینوں نے پینٹی پہن رکھی تھی۔ سمیرا نے میرے مموں پر ایک چماٹ ماری اور بولی کے بڑے ٹائٹ ممے ہیں تیرے تو۔ اور یہ کہ کر سوئمنگ پول میں جمپ لگا کر کسی مچھلی کی طرح تیرنے لگی۔ اسکے بعد سائرہ نے بھی چھلانگ لگائی اور مجھے اپنے پیچھے پانی میں آنے کو کہا۔ میں ایک سائیڈ پر گئی جہاں سیڑھیاں نظر آرہی تھی جو پول کے اندر اتر رہی تھیں، میں ان سیڑھیوں کی مدد سے ڈرتے ڑتے پول میں اتری۔ پانی میرے مموں سے اوپر کندھوں تک تھا اور میرا محض سر ہی پانی سے باہر تھا۔ پانی چونکہ بہ رہا تھا اور ٹیوبویل سے تازہ پانی آرہا تھا اس لیے بہت ٹھنڈا پانی تھا۔ وہ دونوں پول کا ایک چکر لگا کر میرے پاس آئیں اور مجھے بھی تیرنے کو کہا، میں نے کہا کہ مجھے تیرنا نہیں آتا تو انہوں نے مجھے ایک سائڈ سے پکڑا اور پانی میں آگے لے گئیں اور کہا کہ کوشش کرو تیراکی کی دونوں نے مجھے پیٹ سے سہارا دیا اور کہا کہ ہاتھ اور مار کر پانی پر تیرنے کی کوشش کروں، میں نے کوشش کی مگر سیدھا پانی میں غوطہ لگ گیا۔ سمیرا نے مجھے ہاتھ پکڑ کر دوبارہ کھڑا کیا تو میں نے توبہ کی کہ مجھے نہیں تیرنا، میں ایسے ہی کھڑی ہوں تم لوگ تیراکی کرو۔ میں ایسے ہی انجوائے کر لوں گی۔ اس پر سائرہ پول سے باہر نکلی اور ایک کونے میں پڑی ٹیوب اٹھا لائی جو انسان کو ڈوبنے سے بچاتی ہے۔ سائرہ نے وہ ٹیوب مجھے دی اور کہا اسکی مدد سے تیراکی کرو۔ میں نے وہ ٹیوب اپنی کمر کے گرد ڈال لی اور اب پانی پر با آسانی تیرنے لگی۔ کچھ دیر ہم پانی میں ایسے ہی تیراکی کرتی رہیں۔ شروع میں تو پانی میرے کندھوں تک تھا مگر تھوڑا آگے جا کر پول کی گہرائی زیادہ تھی جس کا مجھے سائرہ نے بتا دیا تھا۔

کچھ دیر ہم پانی میں ایسے ہی تیراکی کرتی رہیں۔ میرے لیے یہ پہلا ایکسپیرینس تھا اور کچھ دیر کی تیراکی کے بعد میں نے کم گہرائی والے پانی میں آکر ٹیوب کے بغیر بھی تیراکی کی کوشش کی تو کسی حد تک کامیابی ہوئی مگر محض کچھ سیکنڈ کے لیے ہی میں پانی میں تیر سکی اسکے بعد پھر سے غوطہ لگ گیا تو میں نے دوبارہ ٹیوب پکڑ کر تیراکی جاری رکھی۔ اب سائرہ میرے پاس آئی اور میرے جسم سے چھیڑ خانی کرنے لگی۔ اس نے میرے مموں پر ہاتھ رکھا اور بولی کے بہت پیارے ممے ہیں تمہارے اور انکی گولائی تو رضوان بھائی کو پاگل کر دے گی۔ پھر میری گانڈ پر ہاتھ رکھ کر بولی کہ یہ بھی بہت زبردست ہے میں ہنسی اور کہا تجھے کیوں فکر ہورہی ہے میری، اپنی بھابھی کے ممے اور گانڈ دیکھ اور سوچ تیرے بھائی کا کیا حال ہوتا ہوگا۔ یہ بات سن کر سائرہ زور سے ہنسی جبکہ سمیرا کے گال شرم سے سرخ ہوگئے۔ پھر سائرہ نے میرے جسم کا بغور جائزہ لیا اور کچھ سوچنے لگی۔ پھر اچانک بولی کہ یار رضوان بھائی باہر بور ہورہے ہونگے انکے بھی بلا لیتے ہیں ادھر ہی۔ میں ایک دم ہکا بکا رہ گئی اور کہا یہ کیا بکواس کر رہی ہو؟ سمیرا نے بھی کہا کہ نہیں رضوان کو ادھر نہں بلاو ہم نے کونسا سوئم سوٹ پہنا ہوا ہے ہم تو برا اور پینٹی میں ہیں۔ لیکن سائرہ بضد رہی کہ نہیں انہیں بلانا چاہیے۔ فائزہ تو ویسے ہی اسکی منگیتر ہے اسنے لازمی اپنے حسن کے جلوے پہلے بھی دکھائے ہونگے رضوان کو اور مجھے کوئی فکر نہیں اگر وہ مجھے اس حالت میں دیکھ بھی لے تو مجھے کیا فرق پڑتا ہے وہ کونسا میرا کچھ بگاڑ سکتا ہے۔ مگر سمیرا پھر بھی نا مانی تو سائرہ نے سمیرا کو کہا کہ وہ باہر نکل کر اپنا گاون پہن لے۔ میں رضوان کو بلا رہی ہوں۔ وہ بھی فائزہ کے ساتھ تھوڑا سا انجوائے کر لیں تو کیا حرج ہے۔ مجھے کچھ سمجھ نہیں آرہی تھی کہ کیا کروں۔ سمیرا نے میری حالت دیکھی تو ہنستی ہوئی سوئمنگ پول سے باہر نکل گئی اور کہا فائزہ آج تمہاری خیر نہیں۔ سائرہ نے باہر نکل کر میرا فون اٹھایا اور رضوان کا نمبر ملا کر اسے کہا کہ پول کی طرف آجاو اندر فائزہ آپکو بلا رہی ہے۔ اور سمیرا نے باہر نکل کر ٹاول سے اپنا جسم صاف کیا اور برا اور پینٹی اتار کر گاون پہن لیا۔ اور برا اور پینٹی جگہ پر رکھ دی۔ تھوڑی ہی دیر میں رضوان اندر آتا دکھائی دیا، اس وقت سمیرا پول سے باہر گاون پہن کر کھڑی تھی اور سائرہ میرے ساتھ پول میں تھی، میں نے بھی باہر نکل کر کپڑے پہننے کا کہا تھا مگر سائرہ نے ایسے نہیں کرنے دیا اور کہا اپنے منگیتر کو بھی تھوڑے جلوے دکھا دے اپنے جسم کے۔

رضوان جب پول کے قریب آیا تو ایک بار وہ بھی دیکھ کر حیران رہ گیا۔ سمیرا گاون میں ہونے کے باوجود کافی سیکسی لگ رہی تھی مگر اصل حیرانگی کی بات میرا اور سائرہ کا برا پینٹی پہنے پانی میں موجود ہونا تھا۔ رضوان کے آتے ہی سائرہ پانی سے باہر نکلی اور رضوان کی طرف کمر لچکاتے ہوئے جانے لگی۔ رضوان بھی پھٹی پھٹی نگاہوں سے سائرہ کو دیکھ رہا تھا اور مجھے بھی کچھ سمجھ نہیں آرہی تھی کہ آخر یہ سائرہ کو ہوا کیا ہے۔ سائرہ رضوان کے پاس پہنچی اور اپنے مموں پر ہاتھ پھیرتے ہوئے بولی کیا ہوا رضوان بھائی ایسے کیا دیکھ رہے ہو پہلے کبھی خوبصورت لڑکی نہیں دیکھی کیا؟ رضوان جو بغیر نظریں جھکائے سائرہ کے جسم کو اوپر سے نیچے دیکھ رہا تھا واپس ہوش میں آگیا اور کہا نہیں خوبصورت لڑکیاں تو بہت دیکھی ہیں مگر اس حالت میں کسی کو نہیں دیکھا۔ یہ سن کر سائرہ نے رضوان کے سینے پر ہاتھ رکھا اور اسکی شرٹ کا بٹن کھولتے ہوئے بولی جھوٹ نہ بولیں، فائزہ کو تو ضرور دیکھا ہی ہوگا۔ رضوان نے ٹھنڈی آہ بھرتے ہوئے میری طرف دیکھا اور کہا کہ کوشش تو کئی بار کی مگر تمہاری دوست شرماتی بہت ہے کچھ دکھاتی ہی نہیں۔ میں ابھِی تک پانی میں ہی تھی اور باہر آنے کی ہمت نہیں تھی مجھ میں۔ سائرہ نے پھر اپنا ہاتھ اپنے مموں پر پھیرتے ہوئے پانی نیچے ٹپکایا اور بولی اب ایسی بھی کیا شرم بھلا منگیتر سے بھی کوئی شرماتا ہے کیا اور پھر سے رضوان کی شرٹ کے بٹن کھولنے لگی اب رضوان میں بھی تھوڑا اعتماد آچکا تحا۔ سائرہ رضوان کی شرٹ کے سارے بٹن کھول چکی تھی اور پھر شرٹ اتارنے میں بھی سائرہ نے دیر نہیں لگائی۔ شرٹ اتارنے کے بعد رضوان کی بنیان بھی اتار دی۔ میں نے پہلی بار رضوان کو بغیر شرٹ اور بینان کے دیکھا تھا۔ رضوان کا سینہ بھِی بالوں سے پاک تھا۔ جبکہ میرے بہنوئی عمران کے سینے پر بال موجود تھے۔ رضوان کا سینہ بہت سیکسی لگا مجھے اور سینہ دیکھ کر لگتا تحا کہ رضوان باقاعدگی سے جِم کرتا ہے۔ سائرہ نے اب کی بار رضوان کے سینے پر ہاتھ پھیرا کہ رضوان بھائی اپنا یہ سینہ کسی بھی جوان لڑکی کو دکھاو وہ خود ہی اپنا سب کچھ آپ کو دکھا دے گی۔ یہ کہ کر وہ سمیرا کی طرف دیکھ کر بولی کیوں سمیرا ٹھیک کہ رہی ہوں نہ میں؟ سمیرا ہنستے ہوئے بولی کہ سائرہ تیرا دماغ خراب ہوگیا ہے۔ کیوں تنگ کر رہی ہے رضوان بھائی کو۔ تو سائرہ بولی میں کب تنگ کر رہی ہوں انہیں انہی سے پوچھ لو رضوان بھائی آپ تنگ ہورہے ہیں کیا؟؟؟ رضوان بھلا کیوں کہتا کہ وہ تنگ ہورہا ہے اسکے سامنے تو 2 ننگی لڑکیاں موجود تھیں اور اسے کیا چاہیے تھا۔

اب کی بار سائرہ کے ہاتھ رضوان کی بیلٹ پر تھے اور اسنے رضوان کی بیلٹ بھی کھول دی اور پھر پینٹ کا بٹن بھی کھول دیا۔ میں ابھی تک حیران تھی اور اب مجھے تھوڑا غصہ بھی آرہا تھا کہ آکر یہ سائرہ کی بچی کرنا کیا چاہتی ہے۔ بٹن کھول کر سائرہ نے رضوان کو کہا اب کچھ خود بھی اتار لیں آپ تو ایسے کھڑے ہیں جیسے میں آپکی بیوی ہوں اور میں نے ہی آپکے کپڑے اتارنے ہیں۔ یہ سن کر رضوان ہنسا اور اپنی پینٹ اتار دی۔ اب رضوان محض انڈر وئیر میں تھا اور انڈر وئیر سے رضوان کے لن کا ابھار بڑا واضح تھا۔ اب کی بار سائرہ نے پھر سے رضوان کے سینے پر ہاتھ پھیرا اور نیچے ناف تک ہاتھ لا کر سائڈ پر تھائیز پر ہاتھ لے آئی اور پوچھا سوئمنگ آتی ہے آپکو؟ اب میرے صبر کا پیمانہ بھی لبریز ہوچکا تھا، کوئی اور میری آنکھوں کے سامنے میرے منگیتر سے اسطرح فلرٹ کرے اسکے جسم پر ہاتھ پھیرے یہ میں برداشت نہیں کر سکتی تھی۔ میں ہی کیا کوئی بھِ لڑکی یہ بات برداشت نہیں کر سکتی۔ میں نے ساری شرم ایک سائیڈ پر رکھی اور فوران ہی سوئمنگ پول سے باہر نکل آئی۔ مجھے باہر آتے دیکھا تو اب رضوان کی نظریں میرے جسم پر تھیں اور اسکا بس نہیں چل رہا تحا کہ آگے بڑھ کر مجھے کھا جائے۔ میں نے رضوان کے پاس آکر رضوان کو بازو سے پکڑ کر تھوڑا اپنی طرف کھینچا اور کہا آو ہم سوئمنگ کریں۔ یہ سن کر سائرہ نے زور دار قہقہہ لگایا اور بولی کہ بڑی دیر کر دی تم نے غصہ کرنے میں میرا تو خیال تھا پینٹ اترنے سے پہلے ہی تم باہر آجاو گی، مگر تمہیں باہر نکالنے کے لیے مجھے رضوان بھائی سے فلرٹ بھی کرنا پڑ گیا۔ یہ کہ کر وہ ہنستی ہوئی پانی میں چھلانگ لگا کر تیراکی کرنے لگی اور ہم دونوں کو بھی کہا کہ آجاو۔ اور ساتھ میں سمیرا کو بھِ اسنے بولا کہ اگر دل کرے تو آجاو تم بھی مگر اس نے انکار کر دیا۔ اور رضوان نے بھی فوران ہی پانی میں چھلانگ لگائی اور سائرہ کے پیچھے پیچھے جانے لگا۔ مجھے آج پتا لگا تھا کہ رضوان بھی تیراکی جانتا ہے۔ جب وہ دونوں پانی میں چلے گئے تو اب میرے پاس باہر رہنے کا کوئی جواز نہیں تھا۔ میں نے بھی پانی میں چھلانگ لگائی اور ٹیوب کی مدد سے تیراکی کرنے لگی۔ تھوڑی دیر تیراکی کرنے کے بعد سائرہ باہر نکلی اور ٹاول سے جسم صاف کر کے گاون پہن لیا اور بولی آپ دونوں انجوائے کرو میں اور سمیرا واپس جا رہے ہیں۔ یہ کہ کر اس نے رضوان کو آنکھ ماری اور کہا رضوان بھائی اب فائزہ آپکے حوالے اسکے بدلے مجھے کوئی اچھا سا گفٹ دینا نہ بھولنا۔ رضوان نے بھی ہنستے ہوئے کہا جو تم کہو بلا جھجھک مانگ لینا۔ یہ کہ کر رضوان اب میری طرف آیا جبکہ سمیرا اور سائرہ اپنے کپڑے اٹھا کر باہر چلی گئیں۔

رضوان نے آتے ہی مجھے اپنی بانوں میں لے لیا اور بولا تمہاری دوست تو بہت سیکسی ہے۔ میں نے اسکو کہنی ماری اور ناراض ہوتے ہوئے کہا تمہیں شرم نہیں آئی اسکو کیسے دیکھ رہے تھے تم۔ تو رضوان بولا اب اپنے والی کچھ دکھائے ہی نہ تو دوسری کو ہی دیکھنا پڑے گا نا، اور وہ بھی تو خود ہی میرے سامنے آکر کھڑی ہوگئی اور میری شرٹ بھی اتار دی، میں بھی آخر مرد ہوں۔ اب خود ہی لڑکی ایسی حرکتیں کرے تو میں کیا کر سکتا ہوں۔ یہ کہ کر رضوان نے میرے ہونٹوں پر کس کی اور کہا مگر جو بات تم میں ہے وہ اسمیں نہیں۔ میں نے کہا مکھن نا لگاو مجھے تو رضوان بولا مکھن تو ابھی تم نکالو گی میرا اور میں صحیح کہ رہا ہوں، تمہاری گانڈ اسکی گانڈ سے بڑی ہے۔ میں نے اسکو پھر کہنی ماری اورکہا بڑے ٹھرکی ہو تم اتنی سی دیر میں دونوں کی گانڈ بھی دیکھ لی۔ تو رضوان بولا مرد کی نظریں عورت میں 2 ہی تو چیزیں دیکھتی ہیں۔ ایک عورت کے ممے اور ایک عورت کی گانڈ۔ میں بھی ہنس دی کیونکہ رضوان کہ تو صحیح رہا تھا اور ویسے بھی میرے چوتڑ سائرہ کے چوتڑوں سے بڑے تھے۔ میں نے رضوان کو کہا چلو سوئمنگ کریں اور مجھے سوئمنگ سکھاو تم۔ مگر رضوان نے کہا کہ یہ بڑا سنہری موقع ملا ہے اسکو سوئمنگ میں ضائع نہیں کرنا آج تو کھا جانا ہے میں نے تمہیں۔ یہ کہ کر رضوان نے اپنے ہونٹ میرے ہونٹوں پر رکھ دیے۔

رضوان نے بڑی ہی شدت سے کسنگ شروع کی تھی اسکی ایک وجہ شاید یہ بھی تھی کہ آج پہلی بار رضوان نے مجھے برا اور پینٹی میں دیکھا تھا اس سے پہلے وہ صرف تصویروں میں ہی دیکھتا رہا تھا مجھے اسطرح سے۔ اور رضوان خود بھِی محض انڈر وئیر میں تھا۔ رضوان نے ایک ہاتھ میرے چوتڑوں پر رکھا ہوا تھا اور دوسرا میری کمر کے گرد تھا اور اسکے ہونٹوں نے میرے ہونٹوں کو مضبوطی سے جکڑا ہوا تھا۔ وہ مسلسل میری گانڈ دبا رہا تھا اور اپنی زبان سے میرے ہونٹوں پر دستک دینے لگا تو میں نے بھِی فورا ہونٹ کھول کر اسکی زبان کو اندر آنے کی اجازت دی۔ میرے منہ میں زبان ڈالتے ہی وہ میری زبان کو ٹٹولنے لگا اور زبان ملنے پر وہ اپنی زبان کو میری زبان کو ٹکرانے لگا۔ میں نے بھی اسکی زبان کو چوسنا شروع کر دیا ۔ کبھِ میری زبان رضوان کے منہ میں ہوتی تو کبھی رضوان کی زبان میرے منہ میں ہوتی۔ میرے ہاتھ رضوان کے سینے پر مساج کر رہے تھے۔ تو میرا دل کیا کہ رضوان کے سینے پر بھِی پیار کروں۔ میں رضوان کو سیڑھیوں کی سائیڈ پر لے گئی اور اسکو سیڑھی پر چھڑھنے کو کہا۔ وہ 2 سیڑھیوں پر چھڑھا تو میں نے اسے روک دیا اور کہا ادھر ہی بیٹھ جاو۔ اب پانی رضوان کے انڈر وئیر تک تھا رضوان کی ٹانگیں پانی می تھیں مگر سینہ اور ناف سے اوپر کا حصہ پانی سے باہر تھا۔ میں نے پہلی بار رضوان کا سینہ اتنے قریب سے دیکھا تھا۔ آج سے پہلے کبھی رضوان کی شرٹ نہیں اتاری تھی، جب بھی موقع ملتا تھا رضوان اپنا لن نکال کرمیرے منہ میں ڈال دیتا تھا۔ رضوان کا سینہ بہت پیارا لگ رہا تھا مجھے۔ میںے نے رضوان کے سینے کو چومنا شروع کیا اور رضوان کی گود میں ٹانگیں کھول کر بیٹھ گئی میں گھٹنوں کے بل بیٹھی تھی اور رضوان کے سینے پر پیار کر رہی تھی۔ کبھی میں رضوان کے سینے پر زبان پھیرتی تو کبھی ہونٹوں سے چومتی۔ رضوان نے دونوں ہاتھ میرے چوتڑوں پر رکھے ہوئے تھے اور آہستہ آہستہ انہیں دبا رہا تھا جو مجھے بے حد مزہ دے رہا تھا۔ رضوان کبھِی میرے چوتڑوں کو دباتا تو کبھی اپنے ہاتھ میری ٹانگوں پر تھائیز پر پھیرتا۔ میری تھائیز بالوں سے بالکل پاک تھیں اور ان پر رضوان کے ہاتھوں کا لمس مجھے مدہوش کر رہا تھا۔ میں بھی رضوان کے سینے پر بڑی بیتابی سے پیار کر رہی تھی۔ رضوان کے نپل بھی کافی سخت ہو رہے تھے جن پر میں اپنی زبان پھیر رہی تھی۔ نپلز پر زبان پھیرنے سے رضوان کو بھی شاید مزہ آرہا تھا اس لیے جب میں نے زبان پھیری نپل پر تو رضوان نے میرا سر پکڑ کر تھوڑا سا نپل کی طرف دبایا جس سے مجھے اندازہ ہوگیا کہ رضوان کو اچھا لگا ہے ۔

کچھ دیر رضوان کے نپلز اور سینے پر پیار کرنے کے بعد میں تھوڑا اور نیچے آئی اور رضوان کے پیٹ پر بھی پیار کیا، اب رضوان ایک سیڑھی اور اوپر ہوکر بیٹھ گیا تھا جس سےپانی اور نیچے ہوگیا۔ اب رضوان کا انڈر وئیر بھی پانی سے باہر تھا۔ رضوان کی ناف پر پیار کرتے ہوئے میرا بازو رضوان کے لن سے ٹکرایا تو وہ بہت سخت ہو رہا تھا۔ اب میں نے اپنا دھیان رضوان کےلن کی طرف دیکھا۔ رضوان کی ٹانگوں پربال تھے اور انڈر وئیر کے اوپر سے لن کا ابھار بہت زیادہ تھا، میں نے ایک ہاتھ انڈر وئیر پر رکھ کر اسکو دبانا شروع کیا تو دوسرا ہاتھ رضوان کی ٹانگ پر رکھ کر اسکا مساج کرنے لگی۔ پھر میں نے اپنا ہاتھ رضوان کے انڈروئیر میں ڈالا اور لن باہر نکال لیا، رضوان نے بھی فورا ہی تھوڑا سا اوپر ہوکر اپنا انڈر وئیر اتار دیا۔ اب رضوان میرے سامنے مکمل ننگا تھا۔ میں نے رضوان کا لن تو پہلے دیکھ رکھا تھا مگر رضوان کو مکمل ننگا فرسٹ ٹائم دیکھا تھا۔ میں نے بغیر ٹائم ضائع کیے رضوان کا لن اپنے منہ میں لیا اور اسکو چوسنا شروع کر دیا۔ آج رضوان کا لن چوسنے کا علیحدہ ہی مزہ تھا، اسکی وجہ یہ بھی تھی کہ رضوان مکمل طور پر ننگا تھا اور میں نے بھی صرف برا اور پینٹی پہن رکھی تھی۔ اسکے ساتھ ہی یہ احساس بھی تھا کہ میں سرِ عام رضوان کا لن چوس رہی ہوں کیونکہ ہمارے گرد چار دیواری تو تھی مگر اوپر چھت نہیں تھی۔اور ایسے لگ رہا تھا کہ میں سب کے سامنے رنڈیوں کی طرح رضوان کا لن چوسنے میں مصورف ہوں۔ آج لن چوسنے میں جو مزہ آرہا تھا وہ پہلے کبھی نہیں آیا تھا، میری چوت مسلسل گیلی ہو رہی تھی۔ گیلی تو وہ پہلے ہی تھی پول کے پانی سے مگر اب چوت کے اندر کا پانی بہنے لگا تھا۔ میں کبھی رضوان کا لن چوس رہی تھی تو کبھی رضوان کے ٹٹے منہ میں لیکر چوس رہی تھی۔ رضوان کے لن کی ٹوپی سے بھی پانی نکل رہا تھا جو میرے منہ کو نمکین کر رہا تھا۔ کچھ ہی دیر چوپے لگانے کے بعد رضوان نے اپنا لن میرے منہ سے نکال لیا۔ آج سے پہلے رضوان نے ایسا کبھی نہیں کیا تھا جب تک میں رضوان کو فارغ نہ کروا دیتی وہ اپنا لن میرے منہ سے نہیں نکالتا تھا۔ میں نے رضوان کو کہا ابھی مکھن تو نکالنے دو مجھے تو وہ بولا وہ بھی نکل جائے گا تمہارا جسم دیکھنے کا موقع روز روز نہیں ملنا، آج تو تمہارے ممے دیکھ کر ہی رہوں گا۔ یہ سنتے ہی میں ہنسی اور شرما کر پیچھے ہوئی اور پانی میں رضوان سے دور جانے لگی، رضوان نے بھی ایک ہی جست میں مجھے آن لیا اور مجھے پکڑ کر جپھی ڈال لی اور میرے ہونٹ چوسنے شروع کر دیا۔ نیچے سے رضوان کا لن کھڑا ہوکر میری پھدی پر دستک دے رہا تھا، لن کی یہ دستک مجھے مدہوش کر رہی تھی کتنے عرصے سے میری پھدی میں لن نہیں گیا تھا۔

کسنگ کے دوران رضوان نے میرے برا کی ہک کھول دی اوربرا اتار کر دور پانی میں ہی پھینک دیا۔ اب میرے 34 سائز کے ممے رضوان کے سامنے تنے کھڑے تھے اور نپل سخت ہورہے تھے۔ رضوان نے پہلی بار میرے ممے ننگے دیکھے تھے اور دیکھتا ہی رہ گیا۔ اس نے فورا ہی مجھے گود میں لیا اور میرے ممے پانی سے اونچے کر کے انکو چوسنے لگا۔ اوپر سے رضوان میرے ممے چوس رہا تھا تو نیچے سے رضوان کا لن میری پھدی پر لگ رہا تھا۔ اور میں بھی مدہوش ہوئے جا رہی تھی۔ ایک طرف رضوان میرے نپل چوس کر میرا دودھ پی رہا تھا تو دوسری طرف اسکا لن میری پھدی کو بغاوت پر مجبور کر رہا تھا۔ رضوان میرے تنے ہوئے نپلز کو بڑی گرمجوشی سے کاٹ رہا تحا اور میری سسکیاں نکل رہی تھیں۔ میں نے رضوان کے گلے میں ہاتھ ڈالے ہوئے تھے اور مسلسل سسک رہی تھی۔ میری سسکیاں مسلسل بڑھتی جا رہی تھیں اور مزے کی شدت سے میں نے خود ہی رضوان کے لن پر اپنی پھدی کا دباو بڑھانا شروع کر دیا تھا۔ رضوان بھی آج فل موڈ میں تھا۔ اسکو پہلی بار میرے ننگے ممے ملے تھے اور نیچے اسکے لن پر میری پھدی کا احساس بھی اسکو پاگل کیے جا رہا تھا۔

اب اس نے مجھے گود سے اتارا اور نیچے پانی میں غوطہ لگایا اور میری پینٹی اتار دی۔ پینٹی اتار کر وہ دوبارہ کھڑا ہوگیا اور اپنا ہاتھ میری پھدی پر رکھ دیا۔ میری سسکاری نکل گئی۔ اب رضوان میرے ہونٹ چوس رہا تھا اور نیچے ہاتھ سے میری پھدی مسل رہا تھا۔ میں بھی پاگل ہوئے جا رہی تھی۔ مجھے اب اچانک عمران کی یاد آئی۔ جب پہلی بار میں نے عمران کا لن چوسا تھا تو میں نے عمران کو کہا تھا کہ میری پھدی چاٹیں مگر انہوں نے انکار کر دیا تھا۔ یہ یاد آتے ہی میں نے رضوان کو بے اختیار کہ دیا کہ جان پلیز میری پھدی چاٹو۔ میرے منہ سے جیسے ہی یہ الفاظ نکلے رضوان نےمجھے گود میں اٹھایا اور سیڑھیوں پر لیجا کر بٹھا دیا۔ اب رضوان نے مجھے پیچھے کی طرف لیٹنے کو کہا، میں کہنیوں کے سہارے سے تھوڑا پیچھے کو لیٹی تو رضوان نے میرے چوتڑوں کے نیچے ہاتھ رکھ کر مجھے اوپر اٹھایا اور بلا جھجک اپنا منہ میری پھدی پر رکھ دیا۔ جیسے ہی رضوان کی زبان میری پھدی کے لبوں سے ٹکرائی میں تو جیسے ایک علیدہ ہی دنیا میں پہنچ گئی۔ یہ میری زندگی کا پہلا موقع تھا جب کسی نے میری پھدی پر اپنا منہ رکھا ہو۔ عمران کو بہت بار کہا مگر عمران نے ایسا نہیں کیا تھا اور بالآخر آج رضوان نے میری پھدی چاٹنی شروع کی تھی۔ رضوان نے یہ سب فلموں میں دیکھ رکھا تھا اس لیے اسے اندازہ تھا کہ پھدی کو کیسے چاٹا جاتا ہے۔

رضوان کی زبان میری پھدی میں گھسنے کی کوشش کر رہی تھی مگر پھدی ٹائٹ ہونے کی وجہ سے وہ محض اوپر ہی اوپر پھیر رہا تھا زبان کو۔ جب رضوان پھدی چاٹ رہا تھا تو میری پھدی نے بہت شدت کے ساتھ لن مانگنا شروع کر دیا۔ لیکن ساتھ ہی میرے دل میں ڈر بھی پیدا ہوا کہ کہیں رضوان کو پتہ نہ چل جائے کہ میری پھدی پہلے بھی کسی مرد کا لن لے چکی ہے اور میں اب کنواری نہیں رہی۔ جیسے ہی یہ خیال میرے ذہن میں آیا میرےپورے جسم میں ایک سنسنی سی دوڑ گئی اور میری ساری گرمی دور ہونے لگی اور میں سوچنے لگی کہ اب کیا کروں۔ پھر میں نے سوچا کہ عمران کا لن لیے 6 ماہ ہوچکے اب تک تو میری پھدی دوبارہ سے پہلے کی طرح ٹائٹ ہو چکی ہے لہذا رضوان کو پتہ نہیں چلے گا۔ یہ سوچ کر مجھے کچھ حوصلہ تو ہوا مگر پھر بھی ڈر موجود تھا۔ پھر اچانک ہی مجھے یاد آیا کہ جب عمران نے میرے واش روم میں موجود ٹب میں میری چودائی کی تھی تو میری پھدی بہت زیادہ ٹائٹ ہورہی تھی۔ پھدی سے نکلنے والا پانی بھی پھدی کو چکنا نہیں کر رہا تھا کیونکہ پھدی میں دوسرے پانی کی وجہ سے گیلی ہو رہی تھی۔ اور جب پانی سے باہر نکل کر عمران نے میری پھدی کو خشک کر کے چدائی شروع کی تو پھدی کے پانی نے فورا ہی پھدی کو چکنا کر دیا تھا اور لن دوبارہ سے روانی سے چدائی کر رہا تھا۔

جیسے ہی میرے ذہن میں یہ خیال آیا تو میں نے سوچا یہ سب سے بہتر موقع ہے چدائی کرنے کا۔ پانی کے اندر چدائی ہوگی تو پھدی میں چکناہٹ پیدا نہیں ہوگی اور رضوان کا لن مشکل سے ہی اندر جائے گا جس سے رضوان کو احساس نہیں ہوگا کہ پھدی پہلے پھٹ چکی ہے۔ یہ سوچ کر میں نے پکا ارادہ کر لیا کہ آج رضوان کے لن کو لازمی پھدی کی سیر کروانی ہے۔ یہ سب باتیں سوچتے ہوئے میری پھدی خشک ہوگئی تھی اور اسکی چکناہٹ ختم ہوگئی تھی کیونکہ میرا ذہن سیکس کی طرف نہیں تھا۔ مگر جیسے ہی دوبارہ میں نے توجہ رضوان کی طرف دی جو مسلسل میری پھدی چاٹ رہا تھا تو مجھے دوبارہ سے مزہ آنے لگا اور کچھ ہی سیکنڈ میں میری پھدی کی چکناہٹ واپس آگئی۔ کچھ دیر مزید پھدی چاٹنے کے بغیر رضوان نے اپنا لن ہاتھ میں پکڑا اور میری پھدی پر سیٹ کرنے لگا تو میں نے اسکو منع کر دیا اور کہا تھوڑا اور انتظار کرے۔ یہ کہ کر میں دوبارہ پانی میں آگئی تاکہ پھدی کی چکناہٹ کو پول کا پانی ختم کر دے اور لن ڈالنے میں مشکل ہو۔ پانی میں آکر میں نے ایک بار پھر رضوان کا لن اپنے منہ میں لیا تاکہ رضوان کے لن کو تھوڑا مزہ دیا جاے پھدی میں جانے سے پہلے۔

کچھ دیر رضوان کا لن چوسنے کے بعد رضوان نے کہا اب بس بھی کرو اب مجھے تمہاری پھدی چاہیے میں واپس پانی میں لے آئی رضوان کو اور اسے کہا کہ مجھے ادھر ہی چودو۔ رضوان نے کہا ادھر مشکل ہوگی پانی سے باہر نکل آو تاکہ آسانی سے کر سکیں، میں نے کہا نہیں مجھے شرم آتی ہے تم ادھر ہی نیچے سے اپنا لن ڈال دو۔۔۔ یہ سن کر رضوان نے میری ایک ٹانگ تھوڑا اوپر اٹھائی اور اپنا لن میری چوت پر سیٹ کیا اور ایک جھٹکا مارا۔ مگر لن چوت کے اندر نا جا سکا۔ کیونکہ ایک تو رضوان اناڑی تھا دوسرا ہماری پوزیشن ایسی تھی کہ جس میں لن ڈالنا مشکل ہوتا ہے اور پھر 6 ماہ پہلے کی چدائی کی وجہ سے اب پھدی دوبارہ ٹائٹ ہوچکی تھی۔ رضوان نے ایک بار پھر لن چوت پر رکھا اور دھکا مارا مگر پھر اسکو ناکامی ہوئی۔ تو وہ شرمندہ ہوا کہ لن اندر نہیں جا رہا، میں نے اسکے ہونٹوں پر ایک کس کی اور کہا فکر نہیں کرو چلا جائے گا کنواری پھدی میں مشکل سے ہی جاتا ہے، یہ کہ کر میں نے اسکا لن پکڑا اور اپنی چوت پر سیٹ کیا اور کہا کہ اب دھکا نا مارو بلکہ آہستہ آہستہ زور لگاو۔ رضوان نے ایسا ہی کیا اور میری چوت پر اپنے لن کا دباو بڑھانے لگا۔ میں نے بھی لن کو ہاتھ میں پکڑ کر چوت پر رکھا ہوا تھا اور آہستہ آہستہ لن کا دباو بڑھنے پر کچھ حصہ چوت میں داخل ہوا تحا مگر ابھی یہ نہ ہونے کے برابر ہی تھا۔ اس طرح چدائی کروانا واقعی فائدے میں رہا میرے لیے کیونکہ رضوان کا لن پھدی میں نہیں جا رہا تھا اور الٹا وہ شرمندہ ہو رہا تھا کیونکہ اسنے اپنے دوستوں سے سن رکھا تھا کہ وہ ایک ہی جھٹکے میں پھدی پھاڑ دیتے ہیں۔ خیر اب تھوڑی مزید کوشش کے بعد لن کی ٹوپی میر پھدی میں جا چکی تھی اور میرا تکلیف سے برا حال تحا۔ کیونکہ میری پھدی دوبارہ سے ٹائٹ ہو چکی تھی اور چکناہٹ بھی نہیں تھی۔ اب میں نے اپنا ہاتھ لن سے ہٹا لیا اور رضوان کو کہا کہ وہ دباو بڑھانا جاری رکھے اور ساتھ ہی میری چیخیں نکلنے لگیں۔ میں نے اپنے دانت تکلیف کی شدت سے رضوان کی گردن میں جڑ دیے تھے۔ رضوان کے بڑھتے ہوئے دباوسے اب لن کچھ مزید اندر جا چکا تھا تو میں نے رضوان کو کہا کہ اب جھٹکا مارو زور سے، رضوان نے تھوڑا سا لن باہر نکالا مگر ٹوپی اندر ہی تھی اور ایک زور دار جھٹکا مارا تو آدھا لن میری پھدی میں چلا گیا اور میری درد کے مارے زور دار چیخ نکلی۔ اور آنکھوں سے پانی نکل آیا۔ یہ دیکھ کر رضوان پریشان ہوگیا اور بولا کہ سوری زیادہ زور سے ہوگیا میں باہر نکال لیتا ہوں۔ میں نے اسکو فورا منع کیا کہ باہر مت نکالنا اندر ہی رہنے دو میں تکلیف برداشت کر لوں گی۔ رضوان پھر بھی پریشان تھا، میں نے رضوان کو کہا کہ آہستہ آہستہ لن اندر باہر کرے مگر باہر نہ نکالے۔ رضوان نے ایسے ہی کیا اور آہستہ آہستہ لن اندر باہر کرنے لگا۔ مگر لن اب بھی بہت پھنس پھنس کر اندر جا رہا تھا کیونکہ پھدی میں چکناہٹ بالکل نہیں تھی۔ کچھ دیر ایسے ہی آہستہ آہستہ کرنے کے بعد میں نے رضوان کو کہا کہ ایک اور جھٹکا مارو اور پورا لن میری پھدی میں ڈال دو۔ پھاڑ دو میری کنواری پھدی کو، مگر رضوان نے کہا کہ تمہیں درد ہوگی، میں نے کہا میری درد کی فکر نہ کرو بس تم اپنا کام کرو اور اپنا مزہ لو۔ رضوان نے کہا پھر تیار ہوجاو رضوان نے دوبارہ سے لن تھوڑا سا باہر نکالا اور ایک زور دار جھٹکا مارا۔ مجھے ایسا لگا جیسے کوئی لوہے کی سلاخ میری پھدی کو چیرتی ہوئی اندر تک چلی گئی، میری ایک اور زور دار چیخ نکلی اور میں زور سے رضوان کے ساتھ لپٹ گئی۔ اور اب میرا جسم کانپ رہا تھا۔ لن پورا میرے اندر جا چکا تھا۔ میں نے رضوان کو خوشی سے کسنگ بھی شروع کی اور اسکو شاباش دی کہ اس نے آج میری پھدی پھاڑ دی۔ رضوان بھی بہت خوش تھا کیونکہ اسکو نہ صرف پہلی بار پھدی ملی تھی بلکہ اسکی دانست میں اسنے اپنی منگیتر کا کنوارہ پن ختم کر دیا تھا۔

اب رضوان نے آہستہ آہستہ لن اندر باہر کرنا شروع کر دیا تھا۔ لیکن اس میں بہت مشکل ہورہی تھی۔ کچھ دیر بعد ایسے ہی آہستہ آہستہ کرنے کے بعد میرے برداشت بھی جواب دینے لگی اور اب مجھے ایک جاندار چدائی کی ضرورت تھی تو میں نے رضوان کو کہا چلو اب پانی سے باہر نکلو۔ رضوان نے ایسے ہی باہر کی طرف نکلنا شروع کیا تو میں نے کہا اپنا لن نکال لو باہر۔ رضوان بولا کہ پھر تمہیں دوبارہ تکلیف ہوگی تو میں نے کہا نہیں ایک بار لن اندر تک چلا گیا ہے تو اب دوبارہ بھی چلا جائے گا۔ پھر رضوان نے لن باہر نکالا اور پول سے باہر نکل کر بینچ پر جا کر لیٹ گئی میں۔ اب رضوان میری پھدی کی طرف دیکھ رہا تھا تو میں نے رضوان کو کہا اسکو تھوڑا سا اور چاٹو تو آسانی ہوگی چدائی میں۔ رضوان نے میری دونوں ٹانگیں پھیلائیں اور بیچ میں آکر میری پھدی کو چاٹنے لگا تو میری پھدی نے فورا ہی چکناہٹ پیدا کرنی شروع کر دی۔ رضوان جب میری پھدی چاٹ رہا تحا تو مجھے ایسا محسوس ہوا جیسے کوئی ہمیں دیکھ رہا ہے، میں نے سر اٹھا کر ادھر ادھردیکھا تو کوئی نہیں تھا، آس پاس کوئی بلڈنگ بھی نہیں تھی، سائرہ کے کمرے کی طرف دیکھا تو وہاں بھی کوئی نہیں تھا۔ تو میں نے سوچا کہ میرا وہم ہے اور دوبارہ سے اپنی پھدی چٹوانے لگی۔ جب پھدی دوبارہ سے چکنی ہوگئی تو میں نے رضوان کو کہا اب وہ بینچ پر لیٹ جائے۔ رضوان بینچ پر لیٹا تو میں نے رضوان کا لن منہ میں لیا اور اور 3، 4 چوپے لگا کر لن کو بھی گیلا کیا، پھر اس پر تھوک پھینک کر ہاتھوں سے تھوک اس پر مسلا اور پھر 2 چوپے لگائے اور رضوان کے اوپر آکر بیٹھ گئی اسکا لن اپنی چوت پر رکھ کر اندر لینے کی کوشش کرنے لگی تو ایک بار پھر تکلیف ہونے لگی۔ میری پھدی واقعی میں پہلے کی طرح ہو چکی تھی فل ٹائٹ تھی اور کوئی نہیں کہ سکتا تھا کہ میں پہلے لن لے چکی ہوں۔ میں نے آہستہ آہستہ لن پر اپنا وزن بڑھایا تو آدھا لن میری چوت میں جا چکا تھا مگر تکلیف سے میری بس ہو چکی تھی۔ تو میں نے رضوان کو کہا ایک زور دار جھٹکا مارہ نیچے سے اور پورا لن گھسا دو، یہ سنتے ہی رضوان نے جھٹکا مارا اور پورا لن میرے اندر تھا۔ مگر اب کی بار درد کچھ کم تھی کیونکہ میری چوت کافی چکنی ہو رہی تھی۔ اب آہستہ آہستہ رضوان نے دھکے لگانے شروع کیے تو میں رضوان کے اوپر لیٹ گئی اور اپنی گانڈ اوپر اٹھا لی تاکہ رضوان با آسانی دھکے لگا سکے۔۔۔ کچھ دیر بعد جب لن آسانی سے اندر باہر ہونے لگا تو میں نے رضوان کو کہا دھکوں کی سپیڈ بڑھا دے۔۔۔ رضوان نے جیسے ہی دھکوں کی سپیڈ بڑھائی میری سسکیوں میں بھی اضافہ ہوگیا ۔۔ اف اف اف ف ف ف ف۔۔۔۔ آہ آہ آہ آہ، ، ہائے میری جان۔۔ ُپھاڑ ڈالی میری پھدی۔۔۔ اآہ آہ آہ آہ، ام ام ام۔۔۔۔ اس طرح کی آوازیں مسلسل میرے منہ سے نکل رہی تھی جنکو سن کر رضوا کے دھکے اور بھی تیز ہورہے تھے۔ کچھ مزید دھکے لگے اور میری پھدی نے پانی چھوڑ دیا۔ اب رضوان نے اپنے دھکے روک لیے اور پانی دیکھنے لگا۔ میں نے رضوان کو اٹھنے کا کہا اور اسکو بولا کہ میری ٹانگیں اوپر اٹھا کر چودو مجھے۔

اب میں بینچ پر لیٹ گئی اور رضوان نے میری ٹانگییں اٹھا کر اپنے کندھون پر رکھیں اور لن میری چوت پر سیٹ کر کے ایک ہی دھکےمیں پورا لن اندر ڈال دیا۔ رضوان کا لن اب با آسانی میری چدائی کر رہا تھا۔ رضوان زور زور سے دھکے لگا رہا تھا۔ کچھ دھکوں کے بعد میں نے اپنی پوزیشن چینج کی اور رضوان کو کہا کہ میری ٹانگیں سائیڈ پر پھیلا دے اور میرے اوپر جھک کرمجھے چودے۔ رضوان نے ایسے ہی کیا میری ٹانگیں سائیڈ پر پھیلا دیں اور خود میرے اوپر جھک کر مجھے چودنے لگا۔ اب میرے دونوں ہاتھ رضوان کی گردن کے گرد تھے اور رضوان نے میرے ایک ممے کو اپنے منہ میں لیا ہوا تھا جبکہ دوسرے کو اپنے ہاتھ سے دبا رہا تھا جبکہ نیچے سے اسکے لن کی ضربیں میری پھدی کو سکون بخش رہیں تھیں۔ رضوان بڑی شدت سے میرے ممے چوس رہا تھا اور میں اپنی گانڈ ہلا ہلا کر چودائی میں رضوان کا بھرپور ساتھ دے رہی تھی۔ چودائی کے ساتھ ساتھ میں رضوان سے چودائی کا موازنہ عمران سے کروائی ہوئی چدائی سے کر رہی تھی اور اندازہ لگا رہی تھی کہ کس کی چدائی سے زیادہ مزہ آیا؟/ ت مجھے لگا کہ عمران کی چدائی زیادہ جاندار تھی اور اس میں زیادہ مزہ آیا تھا۔ اسکی ایک وجہ تو شاید یہ بھی ہو سکتی ہے کہ وہ میرا بہنوئی تھا اور یہ احساس کچھ عجیب سا تھا کہ میں اپنے بہنوئی کی گود میں بیٹھی چدائی کروا رہی ہوں اور دوسری وجہ یہ بھی ہو سکتی تھی کہ عمران چدائی میں ایکسپرٹ تھا آخر وہ 6 ماہ سے میری بڑی بہن کی جم کے چوت مار رہا تھا۔

لیکن اس وقت تہ میری چوت میں رضوان کا لن تھا جو مسلسل میری سسکاریاں نکلوا رہا تحا۔ رضوان کے بے تحاشہ دھکوں کے آگے میری چوت نے ایک بار پھر ہار مان لی اور پانی چھوڑ دیا۔ اب کی بار میں نے رضوان کا لن نکالا، اسکو بینچ پر لٹایا اور خود اسکے اوپر اسطرح لیٹ گئی کہ میری پھدی رضوان کے منہ پر تھی اور میرا منہ رضوان کے لن کی طرف۔ اب رضوان میری پھدی چاٹ رہا تھا اور میں اسکے لن کے چوپے لگا رہی تھی جس میں مجھے اپنی پھدی کے پانی کا ذائقہ بھی مل رہا تھا جو کہ رضوان کے لن پر لگا ہوا تھا۔ ہم 69 پوزیشن میں تھے جو رضوان اور مجھے دونوں کو ہی بہت اچھی لگ رہی تھی۔ عمران نے تو میری پھدی چاٹنے سے ہی انکار کر دیا تھا اس لیے اس وقت میں وہ مزہ نہیں لے سکی مگر رضوان کے ساتھ میں نے یہ تجربہ بھی کیا۔ یہ بھِ میری زندگی کا پہلا تجربہ تھا۔ فلموں میں دیکھ رکھا تھا 69 پوزیشن میں لن اور پھدی چاٹنا مگر حقیقت میں یہ پہلی بار ہورہا تھا۔ کچھ دیر اسی پوزیشن میں مزہ لینے کے بعد میں دوبارہ سے رضوان کے لن پر آکر بیٹھ گئی اور ایک ہی جھٹکے میں پورا 7 انچ کا لن اپنی پھدی کی گہرائیوں میں اتار لیا تھا۔ اور میں مسلسل رضوان کے لن کے اوپر چھلانگیں لگا لگا کر اسکو مزہ دے رہی تھی۔ نیچے پڑے بینچ کی بھی میری چھلانگوں سے چیخیں نکلان شروع ہوگئی تھیں کچھ دیر چھلانگیں لگانے کے بعد میں تھک گئی تو میں رضوان کے اوپر لیٹ گئی اور اب نیچے سے رضوان نے دھکے لگانے شروع کیے۔ میں نے رضوان سے کہا کہ جتنی زور سے چود سکتے ہو چود دو مجھے تو رضوان نے اپنے دھکوں کی رفتار اور بھی تیز کر دی۔ اب اسکے طوفانی دھکوں نے مجھے تو جیسے کسی اور ہی دنیا میں پہنچا دیا تھا جہاں بس مزہ ہی مزہ تھا۔ کچھ ہی دیر تک رضوان کے لن نے اپنی سپیڈ اور تیز کی اور رضوان بولا کہ اسکا مکھن نکلنے والا ہے، میں نے رضوان کو کہا بس کچھ دیر اور روک کے رکھو میری بھی منزل قریب ہی ہے، تو رضوان نے اپنی سپیڈ تھوڑی سلو کر دی۔۔۔ میں نے اپنا ایک مما رضوان کے منہ میں ڈال دیا اور اسکو کہا کے دھکے بھی جاری رکھے اور میرے ممے کو بھی چوس چوس کر بڑا کر دے۔ رضوان نے بہت ہی شدت سے مما چوسنا شروع کیا تو اس ڈبل مزے سے میری منزل بھی قریب آنے لگی۔ میں نے رضوان کو کہا کہ بس میں بھی اب چھوٹنے لگی ہوں تو اپنی سپیڈ بڑھا دو، یہ سنتے ہی رضوان نے ایک بار پھر سے چودائی کی اس گاڑی کا پانچواں گئیر لگا دیا اور سپیڈ پر پورا پاوں رکھ دیا۔ میری پھدی میں جیسے کوئی مشین چل رہی تھی تو مسلسل میری پھدی کی دیواروں سے ٹکرا ٹکرا کر مجھے مزہ دے رہی تھی۔ اچانک ہی رضوان کے لن نے سپیڈ ختم کر دی مگر رک رک کر زور زور سے دھکے مارنے لگا۔ رضوان کی منی نکل چکی تھی اور انہی سلو مگر زور دار جاندار دھکوں نے مجھے بھی فارغ کر دیا تھا۔ ہم دونوں اکٹھے ہی فارغ ہوگئے تھے۔ کچھ دیر دونوں کے جسم نے جھٹکے لیے اور پھر جیسے سکون آگیا۔ رضوان نے اب میرا بدن چومنا شروع کر دیا۔ اور مجھے کہا کہ آج اسکو بہت مزہ آیا ہے۔ وہ ساری زندی اپنی یہ پہلی چودائی نہیں بھولے گا۔ میں نے بھی اسکو کہا کہ آج تم نے اپنی فائزہ کو معصوم لڑکی سے عورت بنا دیا ہے اور لن کے مزے سے آشنا کر دیا ہے۔

اب ہم نے اپنے اپنے کپڑے پہنے اور واپس سائرہ کے کمرے کی طرف جانے لگے تو سمیرا ہمِں بڑے حال میں ہی مل گئی ہمیں دیکھتے ہی بولی ہاں جی گئی آپ لوگوں کی سوئمنگ؟؟ تو میں نے شرماتے ہوئے کہا ہاں جی ہوگئی۔ اتنے میں سائرہ بھی سیڑھیاں اترکر نیچے آگئی اور رضوان کو آنکھ مار کر بولی رضوان بھائی فائزہ کو زیادہ تکلیف تو نہیں دی آپ نے؟؟؟ یہ بات سن کر رضوان پہلے تو تھوڑا جھجک گیا کہ کیا جواب دے مگر پھر بولا کہ نہیں سوئمنگ میں کیسی تکلیف۔ البتہ آپکا شکریہ جو آپ نے مجھے فائزہ کے ساتھ سوئمنگ کرنے کا موقع دیا ۔

پھر سائرہ کا ملازم ہم لوگوں کے لیے جوس لے آیا۔ جو پی کر ہم لوگوں نے اجازت چاہی تو سمیرا نے کہا تم دوبارہ بھی چکر لگانا میں ایک مہینہ ادھر ہی ہوں۔ میں نے اسے کہا ہاں جی اگر سائرہ نے آنے دیا تو میں ضرور آوں گی۔ پھر میں دونوں سے گلے ملی اور رضوان کے ساتھ گاڑی میں واپس گھرآگئی۔ راستے میں رضوان بار بار مجھے کہتا رہا کہ چوپے لگوا کر اور مٹھ مار کر کبھی وہ مزہ نہیں ملا جو آج تمہاری پھدی نے دیا ہے۔ میں نے اسے کہا تمہا لن بھی بہت جاندار ہے، شروع میں مجھے بہت تکلیف دی مگر پھر مزہ بھی بہت آیا۔ ایسے ہی ہم گھر پہنچ گئے۔ گھر پہنچ کر رضوان کچھ دیر رکا اور پھر واپس چلا گیا۔ ابو پہلے سے ہی گھر پر تھے۔ میں نے کھانا تیار کیاابو امی کے ساتھ کھانا کھایا اور اپنے کمرے میں چلی گئی۔

کمرے میں جا کر میں نے اپنا موبائل آن کیا اور فیس بک پر رضوان کو میسج کرنے لگی۔ جب موبائل پر فیس بک میسج کھولے تو کسی انجان آئی ڈی سے مجھے میسج آیا ہوا تھا۔ میں نے جب وہ میسج کھولا تو میرے پیروں تلے سے زمین ہی نکل گئی۔ اس میسج میں میری اور رضوان کی چدائی کی تصویریں اور ایک چھوٹی سی چدائی کی ویڈی تھی۔ اور نیچے لکھا تھا کہ اگر تم نے اپنی چوت مجھے نہ دی تو میں یہ تصویریں اور ویڈیو انٹرنیٹ پر پھیلا دوں گا۔ ابھی میں یہ میسیج ہی پڑھ رہی تھی کہ مجھے موبائل نمبر پر بھی ایک انجان نمر سے ایس ایم ایس آگیا۔ اس میں لکھا تھا کہ اگر تم نے چوت دینے سے انکار کیا تو تمہاری عزت انٹرنیٹ پر سرِ عام پھیلا دوں گا تم اور تمہارا یار دونوں بدنام ہوجائیں۔ گے۔ چوت کس دن دینی ہے اسکا میں تمہین بعد میں بتاوں گا۔
یہ میسج پڑھ کر میرا دماغ بالکل ماوف ہوگیا اور مجھے ایسے لگا جیسے میرے ہر طرف اندھیرا ہی اندھیرا ہے۔۔۔۔۔


جاری ہے
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #102  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
aamjayadakha aamjayadakha is offline
Senior Member
 
Join Date: Feb 2009
Posts: 281,504
Default سالی: پورے گھر والی

plzzzz jaldi update kar0 sardi ma buhat maza ata ha ap ki story parna ka jadi and lambi update karo thanx
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #103  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
kamina_pati kamina_pati is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,034
Default سالی: پورے گھر والی

zbardast update......lekin update zara jaldi kya kare.....
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #104  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
kamina_pati kamina_pati is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,034
Default سالی: پورے گھر والی

tamam readers ki taraf se appreciations ar thnx on post milty rahen to hosla barhta ha writer ka. eid k bad 1 aor zbar dast update aye gi is story ki be aor meri dosri story be update hogi
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #105  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
aamjayadakha aamjayadakha is offline
Senior Member
 
Join Date: Feb 2009
Posts: 281,504
Default سالی: پورے گھر والی

adventure dalo thora............................................. ......safer pa ga or rasta ma kisi na zaberdusti ki.............please
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #106  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
totapuri totapuri is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 220,374
Default سالی: پورے گھر والی

update bohat achi ha.lekin apko us harami sho se nahi marwani chaheye thi...
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #107  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
lamboo lamboo is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,888
Default سالی: پورے گھر والی

fiz g hmaray cmnt ka bhi rply kar dn
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #108  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
totapuri totapuri is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 220,374
Default سالی: پورے گھر والی

update yarrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrrr:bj:
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #109  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
rocki rocki is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 221,463
Default سالی: پورے گھر والی

Hot and sexy update Fiz dear
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #110  
Old 11-19-2015, 07:29 PM
desiman7 desiman7 is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 221,141
Default سالی: پورے گھر والی

Nice Story
Dil Jeet Lia
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
Reply

Thread Tools
Display Modes

Posting Rules
You may not post new threads
You may not post replies
You may not post attachments
You may not edit your posts

BB code is On
Smilies are On
[IMG] code is On
HTML code is Off

Forum Jump


All times are GMT -4. The time now is 04:33 AM.


Powered by vBulletin® Version 3.8.3
Copyright ©2000 - 2018, Jelsoft Enterprises Ltd.

Masala Clips

Nude Indian Actress Masala Clips

Hot Masala Videos

Indian Hardcore xxx Adult Videos

Indian Masala Videos

Uncensored Mallu & Bollywood Sex

Indian Masala Sex Porn

Indian Sex Movies, Desi xxx Sex Videos

Disclaimer: HotMasalaBoard.com DOES NOT claim any responsibility to links to any pictures or videos posted by its members. HotMasalaBoard has a strict policy regarding posting copyrighted videos. If you believe that a member has posted a copyrighted picture / video, please contact Hotman super moderator. Members are also advised not to post any clandestinely shot material.