Hot Masala Board - Free Indian Sex Stories & Indian Sex Videos. Nude Indian Actresses Pictures, Masala Movies, Indian Masala Videos

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator


Go Back   Hot Masala Board - Free Indian Sex Stories & Indian Sex Videos. Nude Indian Actresses Pictures, Masala Movies, Indian Masala Videos > Urdu Sex Stories - Urdu font sex stories, urdu kahani, urdu sex kahani

Reply
 
Thread Tools Display Modes
  #61  
Old 11-19-2015, 07:25 PM
gabbar gabbar is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 221,811
Default سالی: پورے گھر والی

bs apni dosri kahani finish kar lon fir isko update karn gi.
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #62  
Old 11-19-2015, 07:25 PM
kamina_pati kamina_pati is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,034
Default سالی: پورے گھر والی

bohat khoob Fiza..... rizwan k sath guzray haseen lamhat k bary me b update karo.
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #63  
Old 11-19-2015, 07:25 PM
gabbar gabbar is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 221,811
Default سالی: پورے گھر والی

bhout achi update hai...
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #64  
Old 11-19-2015, 07:25 PM
aamjayadakha aamjayadakha is offline
Senior Member
 
Join Date: Feb 2009
Posts: 281,504
Default سالی: پورے گھر والی

bot zabardast shandar alla vvvv very hot hot update ha zabardast thank,s g
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #65  
Old 11-19-2015, 07:25 PM
lamboo lamboo is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,888
Default سالی: پورے گھر والی

tareef ka shokria. next update eid holidays k bad.
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #66  
Old 11-19-2015, 07:26 PM
lamboo lamboo is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,888
Default سالی: پورے گھر والی

Agar Friday Tak Story Update na hoi to incomplete sextion main move kar diya jay ga
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #67  
Old 11-19-2015, 07:26 PM
gabbar gabbar is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 221,811
Default سالی: پورے گھر والی


لاہور سے ملتان تک کا سفر ڈائیو میں بہت آرام سے گزارا میں۔ گو کہ میں اکیلی تھی مگر ڈائیو کا سفر ہمیشہ سیف ہوتا ہے۔ 4 سے 5 گھنٹے کے سفر کے بعد میں شام کے 7 بجے اپنے گھر پہنچی تو گھر میں تما م لوگ موجود تھے سب بہت خوشدلی سے ملے اور صائمہ اور عامر کا حال پوچھا اور میرا موبائل لیکر انکی تصویریں دیکھنے لگے۔ رضوان بھی لاہور سے واپس آچکا تھا ملتان اور وہ بھی گھر پر ہی تھا۔ ہم سب لوگ اکٹھے تھے کافی دیر تک باتیں ہوتی رہیں پھر رات کو 9 بجے کھانا کھایا اور پھر رضوان واپس ہاسٹل جانے کی تیاری کرنے لگا۔ واپسی کے لیے نکلنے سے پہلے رضوان نے موقع دیکھ کر مجھے بتایا کے اسکا لن میری پھدی کے لیے بے چین ہورہا ہے لہذا میں کل ہی اس سے ملنے کا پروگرام بناوں۔ میں تو پہلے ہی تیار تھی۔ میں نے بھی کہا کہ فکر نہ کرو کل نہیں تو پرسوں تک کوئی نہ کوئِ پروگرام بن جائے گا۔ اسکے بعد رضوان نے میرے لبوں پر اپنے لب رکھ کر ایک لمبی سی کس کی اور پھر چلا گیا۔

رات کو 11 بجے کے قریب ہم سب گھر والے اپنے اپنے کمروں میں سونے کے لیے چلے گئے۔ مجھے تو فورا ہی نیند آگئی، لاہور میں سوائے چند دنوں کے میں صحیح طور پر سو بھی نہ سکی تھی۔ صبح 10 بجے اٹھ کر ناشتہ کیا اور اسکے بعد کچھ دیر پھر امی کے پاس بیٹھ گئی۔ امی پھر سے عامر کے بارے میں پوچھنے لگیں۔ کچھ دیر بعد جب امی گھر کے کاموں میں مصروف ہوئیں تو میں نے اپنا سامان نکالا بیگ سے اور واپس اپنی جگہ پر رکھنے لگی۔ اسی سامان میں عمران کی دی ہوئی نائٹی بھی ملی، وہ بھی میں نے اپنی الماری میں کپڑوں کے نیچے چھپا کر رکھ دی۔ مگر پھر مجھے عمران کا لن یاد آنے لگا جس سے میں نے خوب چدائی کروائی تھی لاہور میں۔ اور اسکے یاد آتے ہی میری پھدی میں کھجلی ہونے لگی۔ 15 منٹ تو میں نے کھجلی برداشت کی مگر اسکے بعد میری برداشت جواب دینے لگی تو میں نے فورا ہی رضوان کو فون کیا اور اسکو ملنے کی جگہ پوچھی تو اسنے علی کے گھر ہی آنے کو کہا۔ میں فورا ہی تیار ہوئی اور امی کو سائرہ کے گھر جانے کا کہ کر گھر سے نکل گئی اور سیدھا علی کے گھر پہنچی۔ دروازہ کھلا ہی تھا میں اندر داخل ہوگئی نیچے کمرے میں پہچی تو رضوان اور علی دونوں موجود تھے۔

مگر آج اس گھر میں سناٹا تھا۔ پہلے ایک بار پارٹی پر آئی تھی تو کافی ہنگامہ تھا یہاں پر جب میں پہلی بار ندیم کی گود میں بیٹھی تھی اور پینٹ کے اندر سے اسکے لن کا ابھار اپنی گانڈ پر محسوس کیا تھا۔ اسکے بعد جب آئی تو بھی یہاں پر لڑکے اور لڑکیاں موجود تھے اور ندیم ایک لڑکی کی چدائی بھی کر رہا تھا جس کو بعد میں ندیم اور رضوان نے ملکر چودا تھا اور پھر ندیم نے پہلی بار میری گانڈ پھاڑی تھی۔ مگر آج یہاں علی اور رضوان کے علاوہ اور کوئی نہیں تھا۔ میرے اندر داخل ہوتے ہی رضوان آگے بڑھا اور مجھے زور سے جپھی ڈال لی اور میرے ہونٹوں کو چومنے لگا۔ پھر بولا کہ آج بہت دن کے بعد ملی ہو تم بہت یاد آئی تم مجھے۔ اور میرا لن بھی تمہارے بغیر بہت اداس رہا۔ میں نے فورا جواب دیا کہ ایسا تو نہیں ہوسکتا تم نے یقینا رافعہ کی چوت سے اپنے لن کی پیاس بجھائی ہوگی یا پھر علی کی گرل فرینڈ کی گانڈ پھاڑی ہوگی۔ یہ سن کر رضوان بھی ہنس دیا اور علی کی بھی ہنسنے کی آواز آئی اور وہ بولا کہ فائزہ جی رضوان نے تو میری گرل فیرنڈ کی چوت میں اپنا لن ڈال دیا مگر رضوان کی گرل فرینڈ کب ہمارے لنڈ کی سواری کرے گی؟

یہ سن کر رضوان بھی ہنسا اور مجھے علی کے پاس لے گیا اور اسکی گود میں بٹھا تے ہوئے بولا آج دونوں بھائی مل کر فائزہ کی مارتے ہیں۔ میرے لیے اب یہ کوئی نئی بات نہیں تھی۔ علی نے بھی فورا ہی اپنی بانہیں پھیلا کر مجھے کمر سے کس کر پکڑ لیا اور مجھے کسنگ کرنے لگا۔ میں نے بھی فورا ہی اسکو رسپانس دیا اور پیچھے سے رضوان نے میری گردن پر کسنگ شروع کر دی۔

کچھ ہی دیر میں رضوان میری قمیص اتار چکا تھا اور میرے مموں کو برا کی قید سے آزاد کر چکا تھا۔ اب علی میرے مموں کو اپنے منہ میں لیکر کسی بچے کی طرح انکا دودھ پی رہا تھا جبکہ رضوان میری کمر پر اپنی زبان سے مساج کرنے میں مصروف تھا۔ میں زیادہ مزہ لینے کے لیے علی کی گود میں گھٹنوں کے بل بیٹھ گئی جس سے میرے ممے اور اوپر ہوگئے اور علی بڑے آرام سے انہیں اپنے منہ میں لیکر چوسنے لگا تو رضوان نے میری شلوار گھٹنوں تک نیچے کی اور پیچھے سے میری گانڈ میں اپنی زبان گھمانے لگا۔ گھر سے چلنے سے پہلے میں نے خاص طور پر ٹب کے پانی میں گلاب کے عرق کے چند قطرے ملائے تھے اور اس پانی سے غسل کیا تھا اور اسے خاص طور پر اپنی چوت اور گانڈ پر بھی اچھی طرح ڈالا تھا جسکی وجہ سے میری گانڈ سے گلاب کی خوشبو آرہی تھی اور رضوان مسحور ہوکر میری گانڈ چوسنے میں مصروف تھا ساتھ ہی اسنے ایک ہاتھ آگے بڑھا کر اپنی بڑی انگلی میری چوت میں داخل کر دی۔ چوت میں انگلی داخل ہوتے ہی چوت کی دیواریں گیلی ہونے لگیں اور میرا جسم لن کی طلب کرنے لگا۔ میں نے کچھ دیر انگلی سے چدائی کرنے کے بعد رضوان کو پیچھے کیا اور علی کی گود سے اتر کر نیچے بیٹھ گئی اسکی پینٹ کی زپ کھول کر اسکا لن نکال کر ہاتھ میں پکڑ لیا۔

علی کا لن 7 انچ کا تھا۔ لمبائی رضوان کے لن کے برابر ہی تھی مگر موٹائی میں تھوڑا زیادہ تھا خاص کر اسکی ٹوپی کا سائز بڑا تحا۔ ٹوپی کی سائز سے مجھے اندازہ ہوگیا تھا کہ آج کی چدائی میں بھی بہت مزہ آئے گا۔ میں مکمل ننگی تھی اب اور علی کا لن اپنے منہ میں لیکر اسکے چوپے لگانے میں مصروف تھی۔ جب کہ رضوان بھی اپنی پینٹ اتار کر اپنا لن میرے منہ کے قریب لا چکا تھا۔ میں کبھی علی کے لن کو منہ میں ڈال کر چوپا لگاتی تو کبھی رجوان کے لن سے اسکا جوس پینے کے لیے اسے منہ میں ڈال لیتی۔ 5 منٹ کے چوپوں کے بعد میں اپنی جگہ سے اٹھی اور علی کی گود میں بیٹھ گئی۔ علی کی گود میں بیٹھ کر میں نے اسکے لن کو اپنی چوت کے سوراخ پررکھا اور ایک ہی جھٹکے میں پورا لن اپنی چوت میں داخل کر لیا۔ ہلکی سی چیخ کے ساتھ ہی میں نے علی کے لن پر اچھلنا شروع کر دیا اور نیچے سے علی نے بھی دھکے لگانے شروع کیے جبکہ رضوان کا لن میرے ہاتھ میں تھا اور میں اسکی مٹھ بھی مار رہی تھی۔

علی کے لن کا ردھم بہت زبردست تھا اسکی حرکت میری اچھل کود کے ساتھ مکمل طور پر ہم آہنگ تھی، جیسے ہی میں اوپر اٹھتی علی اپنے لن کو نیچے کی طرف لیکر جاتا اور اسکے لن کی ٹوپی قریب قریب میری چوت سے باہر نکلنے کو ہوتی مگر باہر نکلنے سے پہلے ہی میں واپس نیچے بیٹھتی تو علی بھی اپنے لن سے واپس اوپر کی طرف دھکا لگاتا۔ اچھل کود کی اس ہم آہنگی کی وجہ سے علی کا لن جڑ تک میری چوت میں جا کر اپنا کام کر رہا تھا۔ 5 منٹ میں ہی میری چوت نے پانی چھوڑ دیا تو علی نے مجھے اپنی گود سے اتارا اور بیڈ پر لٹا دیا۔ پھر علی میرے اوپر جھکا اور اپنی زبان سے میری چوت کا پانی چاٹنے لگا۔ میری چوت کا پانی اپنی زبان سے صاف کرنے کے بعد اب وہ بہت سپیڈ کے ساتھ اپنی زبان سے میری پھدی چاٹ رہا تھا جبکہ رضوان کا لن میرے منہ میں تھا اور میں اسکے چوپے لگانے میں مصروف تھی۔

کچھ دیر بعد علی نے میری دونوں ٹانگوں کو اٹھا کر اپنے کندھوں پر رکھ لیا اور اپنا لن میری چوت میں داخل کر کے اپنی مشین کو فل سپیڈ میں چلا دیا۔ میرے ممے علی کے لن کے دھکوں کے ساتھ ساتھ اوپر نیچے فل سپیڈ میں ہل رہے تھے اور مجھے اپنی رحم گاہ تک علی کا لن لگتا محسوس ہو رہا تھا۔ اس بار علی میری ٹانگیں اٹھا کر مجھے چود رہا تھا اس لیے اسکی سپیڈ پہلے سے زیادہ تھی اور میرے لیے اسکے دھکوں کو برداشت کرنا مشکل ہورہا تھا۔ میری ہلکی سسکیاں نکلنا شروع ہوئیں تو رضوان اپنی ٹانگیں پھیلا کر میرے سینے ے اوپر آگیا اور اپنا لن میرے منہ میں داخل کر دیا۔ اب میری چوت میں علی کا لن چودائی کر رہا تھا اور منہ میں رضوان کا ن چودائی کرنے میں مصروف تھا۔ اب میرے لیے سانس لینا بھی مشکل ہورہا تھا کیونکہ نیچے علی کے زور دار دھکے تھے اور سینے پر رضوان بیٹھ کر اپنا لن میرے منہ میں ڈالے ہوئے تھا۔ گوکہ رضوان نے اپنا وزن میرے سینے پر نہیں ڈالا تھا مگر اسکا لن میرے منہ میں ہونے کی وجہ سے سانس لینے میں دشواری تحی۔ رضوان چند سیکنڈ کے لیے اپنا لن باہر نکالتا اور جیسے ہی میری سانس بحال ہوتی وہ دوبارہ اپنا لن میرے منہ میں ڈال دیتا۔

کچھ دیر میں میرے جسم میں سوئیاں رینگنے لگی اور اور میرے جسم نے چند جھٹکے کھانے کے بعد اپنا پانی چوت کے راستے چھوڑ دیا۔ چوت کا پانی نکلتے ہی علی سائیڈ پر ہوگیا اور رضوان بغیر ٹائم ضائع کیے نیچے لیٹ گیا اور مجھے اپنے اوپر آنے کو کہا۔ میں بھی فورا رضوان کے اوپر بیٹھ گئی اور اسکا لن اپنی چوت میں ڈال کر اس پر اچھلنے لگی۔ پھر رضوان نے مجھے اپنے اوپر جھکا لیا اور مجھے خوب جوش کے ساتھ چودنے لگا۔ کچھ دیر اس پوزیشن میں چودائی کے بعد علی بھی میرے پیچھے آگیا اور میری گانڈ میں انگلی داخل کر کے چکنائی کا اندازہ کرنے لگا۔ پھر اسنے میری گانڈ پر تھوک کا گولا پھینکا اور انگلی ڈال کر اسکو چکنا کرنے لگا جبکہ رضوان نیچے سے دھکے لگانے میں مصروف تھا۔

علی نے رضوان کو دھکے روکنے کا کہا اور اپنا لن میری گانڈ پر رکھا تو میں رضوان کے لن سے اترنے لگی کیونکہ علی میری گانڈ مارنے کے لیے تیار تھا۔ مگر علی نے مجھے رضوان کے لن سے اترنے نہیں دیا اور کہا ہم اکٹھے تمہیں چودیں گے رضوان تمہاری چوت مارے گا اور میں گانڈ ماروں گا۔ میں نے منع کیا مگر انہوں نے میری ایک نہیں سنی اور علی نے اپنے لن کا پریشر میری گانڈ پر بڑھایا تو اسکی ٹوپی میری گانڈ میں داخل ہوگئی۔ میری ایک زور دار چیخ نکلی۔ ایک ہی وقت میں گانڈ اور چوت میں لن لینے کا یہ پہلا تجربہ تھا جو کہ کافی تکلیف دہ تھا۔ مگر کچھ ہی دیر میں جب علی کا پورا لن میری گانڈ میں جاچکا تو دونوں نے اچھے اور ہلکے ردھم کے ساتھ دھکے لگانا شروع کر دیے تھے۔

نیچے چوت میں رضوان کا لن سیر کر رہا تھا تو اوپر گانڈ میں علی کا لن میری چیخیں نکلوا رہا تھا۔ یہ چیخیں شروع میں تو درد کی وجہ سے تھیں مگر پھر مزے کی شدت بڑھنے لگی تو یہی چیخیں سسکیوں میں تبدیل ہوگئیں اور دونوں لن اپنی سپیڈ بڑھانے لگے۔ رضوان کی سپیڈ ابھی تک فل نہیں ہوئی تھی مگر علی کا لن اب فل سپیڈ میں میری گانڈ بجا رہا تھا اور کچھ ہی دیر میں مجھے اپنی گانڈ میں گیلا پن محسوس ہوا۔ علی کا لن پانی چھوڑ چکا تھا۔ کچھ دیر جھٹکے مارنے کے بعد وہ سائیڈ پر ہوگیا تو رضوان نے بھی اپنا لن میری چوت سے نکال لیا اور مجھے گھوڑی بننے کو کہا۔ میں گھوڑی بنی تو رضوان نے پیچھے سے اپنا لن میری چوت میں داخل کیا اور میرے لٹکتے ہوئے مموں کو اپنے ہاتھ میں پکڑ کر میری چودائی کرنے لگا۔ اس پوزیشن میں رضوان اپنی پوری طاقت کے ساتھ دھکے لگا رہا تھا اور چدائی کا مزہ دوبالا کر رہا تھا۔ کچھ ہی دیر میں اس نے میری چوت کو پانی چھوڑنے پر مجبور کر دیا تھا۔

چوت گیلی ہونے اور پانی سے بھرنے کے بعد رضوان نے اپنا لن چوت سے نکالا اور بغیر ٹائم ضائع کیے اسی پوزیشن میں اپنا لن میری گانڈ میں داخل کر دیا جسکو علی پہلے ہی کافی کھلا کر چکا تھا۔ 3 منٹ میری گانڈ مارنے کے بعد رضوان کا لن بھی چھوٹ گیا۔ میں نڈھال ہوکر گر گئی اور رضوان بھی میرے اوپر ہی لیٹ گیا۔ پھر علی بھی ساتھ آیا اور مجھ سے پوچھا کہ مجھے اسکا لن کیسا لگا؟؟؟ میں نے مسکرا کر اسکی طرف دیکھا اور کہا مزہ دیا ہے تمہارے لن نے بھی۔ یہ کہ کر میں تھوڑا سا اسکی طرف ہوئی اور اسکو کسنگ کرنے لگی اور اسکا لن اپنے ہاتھ میں پکڑ کر اسکو مسلنے لگی۔ وہ اس وقت بیٹھا ہوا تھا۔ علی نے بھی میرے جسم پر ہاتھ پھیرنا شروع کیا جس سے میری گرمی پھر بڑھنے لگی اور علی کا لن بھی کھڑا ہونے لگا۔

5 منٹ کے بعد ایک بار پھر کمرہ میری سسکیوں سے گونجنے لگا اور میری گانڈ اور چوت دونوں میں ایک ساتھ لن اندر باہر جا رہا تھا۔ رضوان اور علی نے دوسرا راونڈ مکمل کیا اور خوب جم کر میری چوت اور گانڈ کی چدائی کی۔ آج پہلی بار مجھے اپنی گانڈ مروانے کا مزہ آیا تھا۔ اسکی وجہ شاید یہی تھی کہ بار بار چدائی سے اب گانڈ لن کی عادی ہوچکی تھی۔ دوسرا راونڈ مکمل ہونے کے بعد ہم تینوں نے اپنے اپنے کپڑے پہنے اور علی فریج میں سے کچھ پھل اور جوس لے آیا جو ہم تینوں نے ملکر کھائے اور شام ہونے سے پہلے میں گھر واپس آگئی۔

گھر واپس آئی تو میں بہت خوش اور مطمئن تھی۔ گانڈ میں درد ضرور تھا مگر آج گانڈ مروانے میں مزہ بھی خوب ملا تھا۔ رات کے کھانے پر سب اکٹھے تھے میں بہانے سے فیاض کو اسکے کمرے میں لے گئی اور اس سے اسکے ایڈمیشن کے بارے میں پوچھا تو وہ بولا کہ تمام لڑکوں کے ایڈمیشن بھیجے جا چکے ہیں مگر اسکا ایڈمیشن نہیں بھیجا سر نے اب وہ پرائیویٹ بھیجے گا ایڈیمیشن یا پھر ایک سال ضائع کرے گا۔ یہ سن کر مجھے بہت مایوسی ہوئی اور سوچا کہ ایک بار پھر سے سر اسلم سے ملوں اور انسے گزارش کروں۔ مگر پھر مجھے انکا وہ ہتک آمیز رویہ یاد آگیا اور میں نے اپنا ارادہ ترک کر دیا۔ اور یہی بہتر سمجھا کہ فیاض اپنا ایڈیمیشن پرائیویٹ ہی بھیج دے۔ ایک سال ضائع ہونے سے تو بچ جائے گا۔

یہ طے کر کے میں واپس اپنے کمرے میں آگئی۔ اگلے دن سب کچھ روٹین کے مطابق چل رہا تھا۔ فیاض سکول تھا جبکہ میں اپنے کالج گئی تھی کافی دن کے بعد۔ کالج میں سائرہ سے بھی سامنا ہوا اور اسنے مجھ سے پوچھا کہ میں اتنے دن کہاں رہی کونٹیکٹ کیوں نہیں کیا۔ پہلے تو میرا بالکل دل نہیں کیا اس سے بولنے کو مگر پھر اسی میں بہتری سمجھی کہ فی الحال اس سے بنا کر رکھی جائے تاکہ اسے معلوم نہ ہو کے اسکے بھائی حیدر کا سمیرا سے رشتہ تڑوانے میں میرا بڑا ہاتھ تھا۔ میں نے اسے اپنے بھانجے کی پیدائش کا بتایا جس پر وہ بہت خوش ہوئی۔ کالج سے چھٹی کے بعد حیدر اپنی گاڑی میں سائرہ کو لینے آیا مجھ سے نظریں ملنے پر اسنے نظریں جھکا لیں۔ لازمی طور پر وہ مجھ سے شرمندہ تھا اپنی نامردی پر۔ سائرہ اسکے ساتھ گھر واپس چلی گئی جبکہ میں واپس اپنے گھر آنے کے لیے رکشہ میں بیٹھ گئی۔

گھر پہنچی تو سامنے فیاض میرا ہی انتظار کر رہا تھا۔ میرے گھر داخل ہوتے ہی وہ بولا کہ آج سر اسلم ملے تھے اور انہوں نے کہا تھا کہ اپنی باجی سے ملواو تمہارے ایڈیمیشن کے لیے کچھ کرتے ہیں۔ اور مجھے سر اسلم کا نمبر دیتے ہوئے بولا انکو فون کر لیں وہ کہ رہے تھے آج ہی اپنی باجی سے ملواو نہیں تو ایڈمیشن بھیجنے میں مسئلہ ہو سکتا ہے۔ دوپہر کے 3 بج رہے تھے۔ کال ٹائم تو ختم ہو چکا تھا مگر پھر بھی میں نے سر اسلم کو کال کرنے کا فیصلہ کیا۔ میں خوش تھی کہ چلو اب فیاض کا داخلہ جا سکتا ہے۔ ساتھ ہی میرے ذہن میں یہ سوال بھی گردش کرنے لگا کہ کیا سر فیاض اب مجھے چودنا چاہتے ہیں؟؟؟ ہو سکتا ہے کہ وہ میرے بارے میں سوچ رہے ہوں اور آخر کر اپنے لن کے سامنے ہار مان لی ہو اور یہ فیصلہ کیا ہو کہ میری چدائی کرنے کی صورت میں وہ فیاض کا داخلہ بھیج دیں گے۔

یہ سوچ کر میں نے سر فیاض کو کال کی۔ میری آواز سنتے ہی انہوں نے کہا "فائزہ بیٹا" کیسی ہو تم؟؟ یہ سن کر میں ایک بار پھر حیران ہوئی کہ اگر سر نے مجھے چودنے کا پروگرام بنایا ہے تو مجھے "بیٹا" کہ کر کیوں بلا رہے ہیں؟؟؟ میں نے حیرت بھرے لہجے میں کہا میں ٹھیک ہوں سر آپ کیسے ہیں۔ تو انہوں نے میری بات کا جواب دینے کی بجائے کہا کہ تم ابھی مجھ سے ملو میں ایڈمیشن بھیج دوں گا۔ مگر اسکے لیے ضرور ہے کہ ابھی مجھ سے آکر ملو۔ اب مجھے دوبارہ سے یقین ہونے لگا کہ ہ میری چوت کے لیے تڑپ رہے ہیں میرے جسم نے ان پر اپنا جادو چلا دیا ہے۔ میں نے پوچھا کہ سر کالج ٹائم تو ختم ہے تو وہ بولے تم میرے گھر آجاو اور ساتھ ہی مجھے گھر کا ایڈریس بھی سمجھا دیا۔ اور بولے میں تمہارا انتظار کر رہا ہوں جلدی آو۔

میں کالج سے تھکی ہوئی آئی تھی اور کھانا بھی نہیں کھایا تھا۔ اب سر سے بات کرنے کے بعد امی کو بتایا کہ فیاض کے ایڈمیشن فارم میں کوئی مسئلہ ہے تو اسکے سر نے مجھے بلایا ہے۔ امی نے کہا فیاض کو ساتھ لے جاو۔یہ سن کر مجھے اپنے اوپر غصہ آنے لگا کہ آخر میں نے ایسا کیوں کہا۔ اب اگر سر کا پروگرام میری چودائی کا ہے تو فیاض وہاں جا کر کیا کرے گا؟ یہ تو کباب میں ہڈی والی بات ہے۔ اب میں بہانے سوچنے لگی مگر کوئی بہانہ نہ بن پایا اور مجبورا فیاض کو لیکر میں سر اسلم کے گھر کی طرف چل پڑی۔

جاری ہے
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #68  
Old 11-19-2015, 07:26 PM
goldfish goldfish is offline
Senior Member
 
Join Date: Dec 2007
Posts: 282,110
Default سالی: پورے گھر والی

کافی دیر تک تو مجھے سمجھ نہیں آئی کہ آخر یہ میرے ساتھ ہوا کیا ہے؟ پھر جب کچھ حواس بحال ہوئے تو میں نے ایک بار پھر سے فیس بک میں میسج اوپن کیا اور وہ تصویریں دوبارہ دیکھنے لگی اور ساتھ ہی ویڈیو بھی دوبارہ دیکھی۔ غور کرنے پر معلوم ہوا کہ یہ بالکل اسی اینگل سے بنائی گئی ہیں جو اینگل سائرہ کے کمرے سے بن رہا تھا جس سے مجھے اتنا اندازہ ہوا کہ ویڈیو بنانے والا سائرہ کے کمرے میں موجود تھا۔ یہ خیال پختہ ہوا تو میں نے سائرہ کے بارے میں سوچنا شروع کیا کہ کہیں اسنے تو یہ ویڈیو نہیں بنائی؟؟؟ مگر پھر سوچا کہ آخر اسکو کیا فائدہ ہوگا میری ایسی ویڈیو بنانے کا اور پھر مجھے بلیک میل کرنے کا؟؟؟ پھر میں نے سائرہ کے بھائی حیدر کے بار میں سوچا کہ ہوسکتا ہے اسنے یہ ویڈیو بنا لی ہو؟ مگر پھر سوچا کہ اس دن تو وہ گھر پر تھا ہی نہیں۔ جب ہم سائرہ کے گھر گئے اس وقت سے لیکر جب اسکے گھر سے واپس نکلے تو حیدر گھر پر نہیں تھا۔

پھر میں سوچنے لگی کہ اگر سائرہ بھی نہیں اور حیدر بھی نہیں تو پھر آخر کون بنا سکتا ہے یہ ویڈیو؟ کافی دیر سوچنے کے بعد اچانک مجھے سائرہ کے اس ملازم کا خیال آیا جو ہمارے لیے پانی لیکر آیا تھا۔ اس وقت میں نے نوٹ کیا تھا کہ سائرہ کے سامنے تو وہ بہت مودب اور آنکھیں جھکا کر کھڑا تھا مگر اسکی نظریں میرے مموں کا دیدار ضرور کر رہی تھیں اسکی آنکھوں میں میرے مموں کی طلب موجود تھی جیسے وہ انہیں فورا اپنے ہاتھوں میں لیکر دبا دینا چاہتا ہو۔ اسکا خیال آتے ہی میرے ذہن نے اس بات کو تسلیم کر لیا کہ یہ حرکت اسی کمینے ملازم کی ہوگی۔

اب میں سوچنے لگی کہ صبح ہوتے ہی اسکی شکایت سائرہ سے کروں گی اور ساری بات اسکو بتاوں گی۔ مگر پھر سوچا کہ سائرہ کیا کر لے گی؟ زیادہ سے زیادہ اس سے موبائل لے کر وہ ویڈیو ڈیلیٹ کر دے گی اور اسکو نوکری سے نکال دے گی؟؟ مگر اب تک تو وہ ملازم میری ویڈیو کو نجانے کہاں کہاں سیو کر چکا ہوگا بیک اپ کے طور پر۔ اور اگر سائرہ کو شکایت لگانے پر اسکو غصہ آگیا تو وہ میری ویڈیو لازمی انٹرنیٹ پر ڈال دے گا۔ یہ خیال آتے ہی میں نے اپنا ارادہ کینسل کر دیا۔ پھر سوچا کہ کیوں نہ رضوان کو بتاوں وہ خود ہی اس سے نمٹ لے گا۔ مگر پھر سوچا کہ اگر رضوان نے غصے میں آکر اسکو قتل کر دیا تو رضوان کا مستقبل کیا ہوگا؟ وہ تو تباہ ہوجائے گا۔ اور یہ بھی ہو سکتا ہے کہ الٹا وہ ملازم رضوان کو کوئی نقصان پہنچا دے اور اس میں بھی پھر وہی رسک تھا کہ اگر اس نے ویڈیو انٹرنیٹ پر ڈال دی پھر رضوان بھی میری عزت نہیں بچا سکے گا۔ آخر کافی سوچنے کے بعد میں اسی نتیجے پر پہنچی کہ اسکو چوت دینے کے علاوہ اور کوئی حل نہیں اس مسئلے کا۔ یہ سوچ سوچ کر میں روتی رہی اور نجانے کب میری آنکھ لگی۔ صبح اٹھی تو سر درد سے پھٹا جا رہا تھا اور آنکھیں سوج چکی تھیں۔ امی نے میری یہ حالت دیکھ کر مجھ سے وجہ پوچھی تو میں نے کہا کہ ساری رات سر میں درد ہوتی رہی اس لیے طبیعت خراب ہے۔ امی نے مجھے ناشتہ کروایا اور گولی دی۔ میں بھی سارا دن اسی کے بارے میں سوچتی رہی۔ یہ دن بھی پریشانی میں گزر گیا اور پھر اگلا دن بھی پریشانی میں ہی گزرا۔ 4 دن گزرنے کے بعد جب میں کسی حد تک اس واقعہ کو بھول چکی تھی تو مجھے پھر سے فیس بک پر اسی کا میسج آیا اور اس میں لکھا تھا کہ آج جمعرات ہے، اتوار والے دن تم نے اپنی چوت مجھے دینی ہے ورنہ تمہاری چودائی کی ویڈیو پورا پاکستان اور پوری دنیا دیکھے گی۔

یہ میسج پڑھ کر میں پھر سے پریشان ہوگئی اور سوچنے لگی کہ آخر اس مصیبت سے کیسے جان چھڑائی جائے۔ مگر کچھ سمجھ ننہیں آئی۔ پھر میں نے اس ملازم کے بارے میں سوچنا شروع کر دیا، وہ کافی لمبا چوڑا اور مضبوط جسم کا انسان تھا۔ اسکے بارے میں سوچتے ہوئے مجھے اسکے لن کا خیال آیا تو میں نے سوچا کہ اسکا لن بھی کافی بڑا اور مظبوط ہوگا۔ آہستہ آہستہ میں نے سوچنا شروع کر دیا کہ وہ میری چودائی کیسے کرے گا؟ کیا وہ وحشیوں کی طرح میرا جسم نوچ لے گا یا پھر کسی محبوب کی طرح میرے جسم کو پیار کرے گا اور میری چودائی کرے گا؟ یہ سوچ سوچ کر مجھے اچانک محسوس ہوا کہ میری شلوار گیلی ہو رہی تھی۔ تب مجھے شرمندگی ہوئی تھوڑی کہ وہ زبردستی میری چدائی کرنے کو تیار ہے اور میں اسکے بارے میں سوچ رہی ہوں کہ وہ میری چودائی کیسے کرے گا۔ پھر اچانک ہی میرے ذہن میں آیا کہ اسکے چوت دیے بغیر کوئی اور راستہ نہیں مگر کیوں نہ میں بھی اس چودائی کی ویڈیو بنا لوں، ہوسکتا ہے بعد میں میرے کسی کام آسکے۔ کیونکہ ظاہری بات ہے وہ مجھ سے ملتے ہی میری چوت میں اپنا لن تو نہیں گھسائے گا بلکہ کچھ باتیں کرے گا اور اس دوران میں کوشش کروں گی کہ کچھ ایسی بات ہوجائے جس سے اسکو بعد میں بلیک میل کیا جا سکے اور اس مصیبت سے جان چھڑوائی جا سکے۔

یہ خیال آتے ہی میں نے فورا شہر کا رخ کیا اور خان پلازہ جا کر ایک خفیہ کیمرہ خرید لیا جو ایک پین کی کیپ میں لگا ہوا تھا۔ یہ کیمرہ مجھے محض 3500 روپے میں مل گیا۔ گھر آکر میں نے اس خفیہ کیمرے کو اپنے بیگ میں فٹ کر دیا اور چیک کرنے کے لیے اس سے ویڈیو بنا کر دیکھی۔ میں نے بیگ ایک سائیڈ پر رکھا اور کمرے میں ادھر ادھر پھرنے لگی۔ روشنی بھی کم زیادہ کر کے دیکھی اور بعد میں ویڈیو چیک کی تو بالکل صحیح اور واضح ویڈیو تھی آواز کی ریکارڈنگ بھی زبردست تھی۔ یہ کیمرہ 2 گھنٹے تک کی ویڈیو بنا سکتا تھا جو اچھا خاصا ٹائم ہے۔ اب میں پر سکون ہوکر اتوار کا انتظار کرنے لگی۔

ہفتے کی رات کو مجھے پھر انجان نمبر سے کال آئی، میں نے ہیلو کہا تو آگے سے آواز آئی جانِ من کل کے لیے پھر تیار رہنا اور اپنی چوت کو بھی میرے لیے تیار رکھنا۔ یہ بہت بھاری آواز تھی جیسے کوئی 35، 40 سال کا مرد بول رہا ہو۔ میں نے اسکو گالی دی اور کہابہن چود آخر تو میرے پیچھے کیوں پڑ گیا ہے؟ تجھے جتنے پیسے چاہیے بتا میں تجھے دیتی ہوں جا کر کسی چکلے پر کسی رنڈی کی چدائی کر لے میرا پیچھا چھوڑ دے۔ میری باتیں سن کر اس نے قہقہ لگایا اور بولا جانِ من تمہاری چوت کی بھی بھلا کوئی قیمت ہو سکتی ہے؟ مجھے کچھ نہیں چاہیے سوائے تمہاری چوت کے۔ اسکے بعد اس نے غصے میں غراتے ہوئے کہا کہ اپنی چوت کی صفائی کر کے آنا مجھے بالوں والی چوت پسند نہیں۔ اور اچھی طرح تیار ہوکر آنا ورنہ تمہاری تصویریں فیس بک پر تمہاری پروفائل پر اپلوڈ ہوجائیں گی۔ یہ کہ کر اسنے فون رکھ دیا اور میں پھر سے رونے لگ گئی۔ پریشانی میں مزید اضافہ ہوگیا تھا۔ کافی دیر رونے کے بعد میں نے سوچا کہ جب چوت دینی ہی ہے تو کیوں نے آرام اور سکون سے دی جائے۔ پریشان ہونے کا کیا فائدہ؟ جب اس چوت میں ایک لن جانا ہی ہے تو کیوں نہ اس لن کا مزہ بھی لیا جائے اور پریشان ہوکر بلاوجہ اس مزہ کو کرکرا نہیں کرنا چاہیے۔ یہ سوچ کر میں اٹھی اور میں نے واش روم جا کر اپنی چوت اور انڈر آرم بال صاف کیے اور آرام سے آکر سوگئی۔ صبح 10 بجے اٹھ کر ناشتہ کیا اور 11 بجے کے قریب مجھے کال آئی کہ 12:30 منٹ تک گلگشت میں موجود پیزا ہٹ کے ساتھ گول باغ کے سامنے آکر کھڑی ہوجاو اور مجھے کال بیک کرو۔ میں پھر بتاوں گا کہ تمہیں کہاں آنا ہے۔

میں کال سن کر اٹھی اور تیاری کرنے لگی۔ میں نے ایک جی سٹرنگ نیٹ کی پینٹی پہنی اور اسکے ساتھ ایک ٹراوزر پہنا۔ اوپر سے میں نے انڈر وائرڈ برا پہنا نیلے رنگ کا جس نے میرے مموں کو اوپر اٹھا کر اور بھی سیکسی بنا دیا۔ اب دونوں ممے آپس میں جڑے ہوئے تھے اور سینے کی لائن یعنی کے کلیوج کافی واضح ہوگئی تھی۔ اسکے اوپر میں نے ایک لوز اپر پہنا۔ تھوڑا سا میک اپ کیا اپنے آپ کو شیشہ میں دیکھا۔ لوز اپر میں سے کلیوج کافی واضح نظر آرہی تھی جس سے میں بہت سیکسی لگ رہی تھی۔ اوپر سے میں نے ایک چادر لی اور امی کو بتایا کہ میں دوست کے گھر جا رہی ہوں۔ امی نے دوست کا نام پوچھا تو میں نے سائرہ کا ہی نام بتا دیا اور باہر نکل کر سائرہ کو کال کی کہ میں رضوان سے ملنے جا رہی ہوں اگر امی کا فون آئے تو بتا دینا کہ میں تمہارے گھر پر ہی ہوں۔ سائرہ نے بھی کہا کے بے فکر ہوکر جاو آنٹی کا فون آیا تو میں سنبھال لوں گی۔

فون کر کے میں رکسشے میں بیٹھی اور گول باغ جا کر اسکو کال کی۔ اس نے کہا کہ اب ایسا کرو گردیزی مارکیٹ آجاو۔ یہ مارکیٹ یہاں سے تھوڑا ہی دور تھی میں نے پھر رکشہ لیا اور گردیزی مارکیٹ چلی گئی۔ وہاں سے میں نے پھر کال کی تو اسنے مجھے ایک ہوٹل کا نام بتایا اور ایڈریس بتایا کہ اس ہوٹل میں آجاو اور باہر کھڑی ہوکر مجھے کال کرو۔ یہ کہ کر اسنے کال بند کردی اور میں کھڑی اسکو گالیاں دینے لگی کہ ایک تو میری چوت مارنا چاہتا ہے زبردستی اوپر سے مجھے جگہ جگہ ذلیل کر رہا ہے۔ پھر میں نے رکشہ پکڑا اور اسکے بتائے ہوئے ہوٹل کے سامنے پہنچ کر اسکو دوبارہ کال کی تو اسنے کہا اسی ہوٹل کے کمرہ نمبر 203 میں آجاو۔

میں ہوٹل کی ریشیپشن پر گئی اور کمرہ نمبر 203 کا پوچھا۔ انہوں نے مجھے سیکنڈ فلور پر جا کر رائٹ سائد پر تیسرے کمرے کا بتایا۔ میں لفٹ سے اوپر پہنچی اور 203 نمبر کمرے کے سامنے جا کر کھڑی ہوئی۔ یہاں پہنچ کر اب میری ٹانگیں کانپ رہی تھی اور میں سوچ رہی تھی کہ معلوم نہیں آگے کیا ہوگا اور یہ شخص میرے ساتھ کیا کرے گا۔ کمرے کے سامنے پہنچ کر میں نے چادر اتار کر اپنے ہینڈ بیگ میں ڈالی اور بیگ میں فِٹ کیا ہوا کیمرہ آن کر دیا۔ پھر حوصلہ جمع کیا اور دروازہ ناک کیا۔ اندر سے آواز آئی کون؟ میں نے اپنا نام بتایا تو دوبارہ آواز آئی اندر آجاو۔ یہ آواز مجھے جانی پہچانی سی لگی۔ میں نے دروازہ کھولا اور اندر داخل ہوگئی۔ میرے سامنے ایک ڈبل بیڈ تھا جسکے ساتھ ایک صوفہ پڑا تھا اسکے سامنے ایک ٹیبل پڑی تھی جس پر کچھ مشروب رکھے ہوئے تھے۔ سامنے ایک شیشے کی ونڈو تھی جسکے سامنے ایک چھوٹے قد کا شخص کھڑا تھا۔ میں نے پہلے تو پیچھے مڑ کر دروازہ بند کیا کنڈی لگائی اور مناسب جگہ ڈھونڈنے لگی بیگ رکھنے کے لیے جہاں سے ویڈیو بن سکے۔ میں نے سامنے ٹیپبل پر ہی بیگ رکھ دیا کیونکہ یہاں سے بیڈ کی ویڈیو با آسانی بن سکتی تھی کیونکہ آخر کر چدائی تو بیڈ پر ہی ہونی تھی۔

اب میں نے اس شخص کی طرف دیکھا، اسکی پیٹھ میری طرف تھی۔ میں نے اندازہ لگا لیا کہ یہ وہ ملازم تو ہرگز نہیں کیونکہ اسکا قد بڑا تھا۔ پھر سوچنے لگی کون ہو سکتا ہے یہ مگر کچھ سمجھ میں نہ آئی۔ پھر میں نے حوصلہ کیا اور اپنا اعتماد بحال کرتے ہوئی بولی کہ اب میں اپنی چوت دینے آ گئی ہوں تو اپنی شکل بھی دکھا دو۔ وہ میری بات سن کر آہستہ آہستہ مڑا اور جیسے ہی میری نظر اس پر پڑی تو میں حیران رہ گئی۔ یہ کوئی اور نہیں بلکہ سائرہ کا بھائی حیدر ہی تھا۔ میرے منہ سے ایک دم نکلا حیدر تم؟؟؟؟؟ وہ میرے سامنے نظریں جھکائے کھڑا تھا اور مجھ سے نظریں نہیں ملا رہا تھا۔ میں دوبارہ اس سے مخاطب ہوئی کہ حیدر آخر تم نے یہ سب کیوں کیا؟ مگر وہ چپ چاپ کھڑا رہا۔ وہ کچھ کہنا چاہ رہا تھا مگر کہ نہیں پا رہا تھا۔ میں آگے گئی اور اسکا ہاتھ پکڑ کر اسکو بیڈ پر بٹھایا۔ اسکا ہاتھ بہت گرم تھا جیسے اسے 104 ڈگری بخار ہو۔ مگر یہ گرمی بخار کی نہیں بلکہ میری چوت کو چودنے کے لیے تھی۔ اسکو بٹھا کر میں خود اسکے ساتھ بیٹھ گئی اور اپنے بیگ کی طرف دیکھا۔ اینگل سے مجھے اندازہ ہوگیا کہ یہاں کی ویڈیو با آسانی بن رہی ہوگی۔ پھر میں نے حیدر سے پوچھا کہ حیدر یہ سب آخر کیوں؟ تو اسکے منہ سے صرف اتنا ہی نکلا کہ "سوری فائزہ آپی"۔ حیدر سائرہ سے چھوٹا تھا اور وہ مجھے آپی کہتا تھا۔ میری حیدر سے پہلے بھی کافی بار ملاقات ہوئی تھی ۔ اکثر جب ڈرائیور کی غیر موجودگی میں سائرہ کو کالج سے گھر جانا ہوتا تو حیدر لینے آتا تھا اور میری بھی ملاقات ہوجاتی تھی۔

میں نے حیدر سے پوچھا کہ آخر یہ سب تم نے کیوں کیا؟؟؟ وہ پھر بھی خاموش بیٹھا رہا۔ اور صرف اتنا ہی بولا کہ میں بس آپکو چودنا چاہتا ہوں۔ میں نے کہا وہ تو مجھے بھی پتا ہے میں اسی لیے آئی ہوں، مگر میرے تو وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ مجھے بلیک میل تم کر رہے ہو؟ اب میرے ذہن میں کچھ سوالات ہیں جو مجھے پریشان کر رہے ہیں۔ جب تک تم انکے جواب نہیں دیتے تب تک مجھے سکون نہیں ملے گا۔ اور اس حالت میں سیکس کرنے کا بالکل مزہ نہیں آتا۔ تم میرے سوالوں کے جواب دو اسکے بعد جو چاہو میرے ساتھ کر لینا۔ تاکہ میں سکون سے کروا سکوں اور چودائی کا مزہ بھی لے سکوں۔ میری یہ بات سن کر حیدر کچھ مطمئن ہوا اور بولا کہ پوچھیں آپ کیا پوچھنا چاہتی ہیں؟

میں نے پوچھا کہ تم اتنے امیر ہو تمہارے پاس پیسہ بھی ہے گاڑی بھی ہے اور بہت سی لڑکیاں تم پر مرتی ہیں۔ وہ خوشی خوشی تم سے دوستی کرنے ک لیے تمہیں اپنی چوت دینے کو بھی تیار ہیں پھر آخر تم نے میرے ساتھ ہی ایسا کرنے کو کیوں سوچا؟

حیدر نے جواب دیا کہ مجھے کبھی کوئی لڑکی پسند نہیں آئی اور اگر آئی بھی تو میں اپنی شرم کی وجہ سے اسکو اپنی طرف مائل نہیں کر سکا۔ محض باتھ روم جا کر اسکے بارے میں سوچ سوچ کر مٹھ مار کر گزارا کرتا رہا۔

حیدر واقعی میں ایک شرمیلا لڑکا تھا۔ میں نے اگلا سوال کیا کہ اگر تمہیں اتنی شرم آتی ہے تو تم نے مجھے چودنے کے بارے میں کیسے سوچ لیا؟ اور اتنی ہمت کیسے کر لی؟

تو اسنے بتایا کہ میں آپکو شروع سے ہی پسند کرتا ہوں۔ جب آپ سائرہ آپکی کے ساتھ مجھ سے ملتی تھیں تب سے ہی مجھے آپکے ہونٹ بہت پسند تھے میں آپکے ہونٹوں کو چوسنا چاہتا تھا اور آپکے بڑے بڑے ممے جب میری آںکھوں کے سامنے آتے تو میرا دل کرتا تھا کہ میں انہیں اپنے ہاتھوں میں پکڑ کر پیار کروں انکو دباوں اور انہیں اپنے منہ میں لے کر چوس لوں۔ اب جب آپکی ویڈیو اور تصویریں دیکھیں اور آپکو اپنے منگیتر کے ساتھ سیکس کرتے ہوئے دیکھا تو میرا صبر جواب دے گیا اور میں نے ارادہ کر لیا کہ اب آپکو ہر صورت میں حاصل کرکے آپکے ممے دبانے ہیں اور آپکی چوت مارنی ہے۔

پھر میں نے پوچھا کہ یہ ویڈیو تم نے کیسے بنا لی ، تم تو اس دن گھر پر تھے ہی نہیں۔

اس پر پہلے وہ خاموش رہا پھر بولا کہ اس بات کو رہنے دیں آپ۔ میں نے کہا نہیں مجھے یہ جاننا ہے۔ پھر وہ کچھ دیر خاموش رہا اور کہا پھر آپ مجھ سے وعدہ کریں کہ آپ اس بارے میں سائرہ آپی کو کچھ نہیں بتائیں گی اور ان سے دوستی بھی ختم نہیں کریں گی۔ اور انہیں کبھی نہ پتا چلے کہ میں نے یہ بات آپکو بتائی ہے۔ میں نے وعدہ کیا تو حیدر بولا کہ اصل میں یہ ویڈیو میں نے نہیں بنائی، میں واقعی اس دن گھر پر نہیں تھا۔

تو میں نے حیرانگی سے پوچھا اگر تم نے نہیں بنائی تو پھر کس نے بنائی؟ اور تمہارے پاس کیسے آئی۔ تو حیدر نے بتایا کہ یہ ویڈیو سائرہ آپی نے بنائی ہے اور انہوں نے ہی مجھے دی ہے۔

یہ سن کر مجھ پر جیسے سکتہ طاری ہوگیا اور مجھے اپنے کانوں پر یقین نہیں آرہا تھا کہ واقعی حیدر نے سائرہ کا نام لیا ہے یا پھر بات کچھ اور ہے؟ میں نے پھر حیدر سے پوچھا کہ سائرہ نے کیوں بنائی یہ ویڈیو؟ اور آخر اس نے تمہیں کیوں دی؟؟

اس پر حیدر نے کہا کہ یہ لمبی کہانی ہے۔ میں ایک دن سائرہ آپی کو لیکر انکی ایک دوست کے گھر گیااور انہیں دوست کے گھر چھوڑ کر میں اپنے دوستوں کے ساتھ مارکیٹ چلا گیا۔ 3، 4 گھنٹے بعد میں دوبارہ سائرہ آپکے کی دوست کے گھر گیاانہیں لینے کے لیے اور گھر کے اندر داخل ہوا تو میں نے دیکھا کہ سامنے ہی گاڑی میں سائرہ آپی بیٹھی تھیں اور انکے ساتھ انکی فرینڈ کا بھائی تھا۔ دونوں گاڑی کی پچھلی سیٹ پر بیٹھے تھے اور کسنگ کر رہے تھے۔ وہ لڑکا سائرہ آپی کے ہونٹ چوس رہا تھا اور سائرہ آپی بھی کسنگ میں اسکا بھرپور ساتھ دے رہی تھیں۔ سائرہ آپی اس لڑکے کی گود میں بیٹھیں تھیں اور ہلکا ہلکا اچھل رہی تھیں جیسے اسکے لن کے اوپر اپنی چوت کو دبا رہی ہوں۔ اور لڑکے کے ہاتھ سائرہ آپی کے مموں پر تھے۔ اور وہ مسلسل کسنگ کرنے کے ساتھ ساتھ سائرہ آپی کے ممے دبا رہا تھا۔ اچانک ہی سائرہ آپی کی نظر مجھ پر پڑ گئی تو وہ ہڑ بڑا کر اسکی گود سے اتر گئیں اور اس لڑکے نے بھی مجھے دیکھا تو چپ چاپ گاڑی سے نکل کر واپس اپنے گھر میں داخل ہوگیا۔ سائرہ آپی فورا گاڑی سے باہر آئیں اور مجھے کھینچتے ہوئے گاڑی کے اندر بٹھا کر دروازہ بند کیا اور میری منتیں کرنے لگ گئیں کہ پلیز یہ بات کسی کو مت بتانا۔ میں تو ایسے ہی اسکے ساتھ مستی کر رہی تھی جیسا تم سوچ رہے ہو ویسا کوچھ نہیں۔ مستی کے علاوہ اور کچھ نہیں کیا میں نے اسکے ساتھ صرف کسنگ ہی کی ہے۔ میں نے غصے سے کہا آپ اسکی گود میں بیٹھیں کیا کر رہی تھیں؟ صرف کسنگ؟ تو سائرہ آپی شرمندہ ہوکر بولیں وہ میں ویسے ہی اسکو چھیڑ رہی تھی تنگ کرنے کے لیے لیکن پلیز میرے بھائی یہ بات کسی کو نا بتانا پلیز پلیز۔

مزید حیدر نے کہا کہ جب میں نے اس لڑکے کو سائرہ آپی کے ممے دباتے ہوئے دیکھا تو مجھے فورا آپکی یاد آگئی اور میرا بہت دل کیا کہ اس وقت اس لڑکے کی جگہ میں ہوتا اور سائرہ آپی کی جگہ فائزہ میری گود میں بیٹھی ہوتی اور میں فائزہ کے ممے دباتا ایسے ہی۔ جب سائرہ آپی نے میری منتیں کیں تو میں نے سوچ لیا کہ اب سائرہ آپی ہی مجھے یہ موقع دیں گی کہ میں آپکے ممے حاصل کر سکوں۔ تبھی میں نے سائرہ آپی کو آپکے بارے میں بتایا کہ میں آپکو بہت پسند کرتا ہوں۔ اگر سائرہ آپی آپکو میرے بیڈ روم تک پہنچا دیں تو میں یہ بات کسی کو نہیں بتاوں گا اور سائرہ آپی فورا ہی مان گئیں میری بات۔ اور ساتھ ہی کہا مجھے پہلے ہی شک تھا تم جس طرح بھوکی نظروں سے فائزہ کے مموں کی طرف دیکھتے تھے مجھے پتا تھا تم اسکے مموں کو حاصل کرنا چاہتے ہو۔ اسکے بعد ہم گھر واپس آگئے اور سائرہ آپی نے وعدہ کیا کہ وہ اس معاملے میں میری پوری مدد کریں گی۔

پھر اس دن جب سائرہ آپی آپکے گھر آئیں تو انکا مقصد یہی تھا کہ آپکا ہمارے گھر آنا جانا شروع ہو اور آہستہ آہستہ آپکی میرے ساتھ بھی فریکنیس بڑھ جائے تو آسانی ہوجائے گی آپکے ممے حاصل کرنے میں ۔ ساتھ میں آپکے منگیتر بھی آگئے ہمارے گھر۔ اور جب آپ لوگ سوئمنگ کر رہے تھے تبھی سائرہ آپی نے سوچا کہ آپکو اور آپکے منگیتر کو موقع دیں کہ آپ ایکدوسرے کو پیار کرو۔ سائرہ آپی کو پتہ تھا کہ جب آپکے منگیتر آپکو برا اور پینٹی میں گیلے جسم کے ساتھ دیکھیں گے تو وہ آپکو پیار ضرور کریں گے اور سائرہ آپی آپکی تصویریں بنا لیں گی۔ مگر آپ دونوں نے تو حد ہی کر دی سائرہ آپی نے صرف پیار کرنے کا موقع دیا تھا اور آپ لوگوں نے وہیں پر چدائی بھی شروع کر دی۔ اور اس طرح میرا کام بن گیا۔

یہ آخری الفاظ کہتے ہوئے حیدر کا لہجہ بڑا معنی خیز تھا جیسے اسنے کوئی فتح حاصل کر لی ہو اور جو وہ چاہتا تھا وہ ہوگیا۔ پھر میں نے پوچھا کہ تمہاری منگیتر سمیرا کو بھی اس بارے میں علم ہے؟

تو اسنے بتایا کہ نہیں سمیرا کو اس پورے معاملے کا کوئی علم نہیں۔ جب سائرہ آپی اوپر سے آپ دونوں کو سوئمنگ پول میں پیار کرتے ہوئے دیکھ رہی تھیں تو سمیرا بھی ساتھ تھی، مگر جیسے ہی آپکے منگیتر نے اپنا لن باہر نکالا تو سمیرا کمرے سے باہر چلی گئی اور سائرہ آپی نے کمرے کی کنڈی لگا کر آپکا پورا چدائی کا شو ریکارڈ کیا اور بعد میں ویڈیو اور تصویریں مجھے دے دیں کہ اب آگے جو کرنا ہے تم خود کرو۔

یہ سب سن کر ہم دونوں کافی دیر خاموشی سے بیٹھے رہے۔ میں سوچ رہی تھی کہ آخر سائرہ نے ایسا کیوں کیا؟ اسنے اپنی عزت بچانے کے لیے میری عزت داو پر لگا دی۔ مجھے غصہ بھی آرہا تھا۔ اب مجھے اس ہوٹل کے کمرے میں آئے ہوئے قریبا آدھے گھنٹے سے زیادہ کا ٹائم گزر چکا تھا۔ پھر میں اپنی سوچوں سے نکل کر واپس کمرے میں آئی اور مجھے احساس ہوا کہ میرے ساتھ اس وقت ایک لڑکا بیٹھا ہے جو مجھے چودنے کی شدید خواہش رکھتا ہے اور میں بھی اس سے اپنی چوت مروانے کے لیے اپنے بال صاف کرکے آئی ہوں۔ یہ سوچ کر میرا جسم گرم ہونے لگا۔

اور میں نے سوچا کہ اب جس کام کے لیے آئی ہوں وہ کر لینا چاہیے۔ میں نے حیدر کا ہاتھ پکڑا تو وہ اب ٹھنڈا تھا۔ میں نے اسکا ہاتھ پکڑ کر اپنی ٹانگ پر رکھ دیا۔ اور اپنا ہاتھ اسکی ٹانگ پر رکھا۔ پھر آہستہ آہستہ میں اسکی تھائی کو دبانے لگی اور اس سے پوچھا اب تم اپنی فائزہ آپی کے ممے دبانا چاہتے ہو یا نہیں؟؟ تو حیدر خوشی سے بولا اسی کے لیے تو اتنی محنت کی ہے۔ اسکی اس بات کے مکمل ہوتے ہی میں اٹھی اور اسکی گود میں گھٹنوں کے بل بیٹھ گئی اور اپنے ہونٹ حیدر کے ہونٹوں پر رکھ کر انکو چوسنا شروع کر دیا۔ حیدر نے بھی اپنے دونوں ہاتھ میری گردن پر رکھے اور میرے ہونٹوں پر ااپنے ہونٹ رکھ کر انہیں چوسنے لگا۔ وہ بڑی بیتابی اور شدت سے میرے ہونٹ چوس رہا تھا۔ کچھ ہی دیر بعد ہم دونوں کی زبانیں آپس میں لڑائی کر رہی تھی اور ایکدوسرے کو خوب ٹکریں مار رہی تھیں۔ میں نے اپنا منہ کھولا اور حیدر کی زبان کو اپنے منہ میں داخل ہونے دیا۔ اسنے جیسے ہی زبان میرے منہ میں ڈالی میں نے اسکو بڑی گرمجوشی کے ساتھ چوسنا شروع کر دیا۔ ہم دونوں کی کسنگ جاری تھی، میں نے حیدر کے ہاتھ پکڑے اور گردن سے ہٹا کر اپنی گانڈ پر رکھ دیے اور کہا اپنی فائزہ آپی کے چوتڑ بھی دباو۔ اس نے جیسے ہی میرے چوتڑ محسوس کیے جو گوشت سے بھرے ہوئے تھے تو فورا ہی انکو دبانا شروع کر دیا۔ اب اسکی کسنگ میں اور بھی تیزی آگئی تھی اور اسکی گرم سانسیں مجھے محسوس ہو رہی تھیں۔

کچھ دیر ایسے ہی کسنگ کرنے کے بعد میں اسکی گود سے اٹھی اور منہ دوسری طرف کر کے دوبارہ اسکی گود میں بیٹھ گئی۔ اب میری کمر حیدر کی طرف تھی اور میں اپنی ٹانگیں موڑ کر حیدر کی گود میں بیٹھی تھی میری گانڈ حیدر کے لن کے بالکل اوپر تھی ۔ اسطرح بیٹھنے کے بعد میں نے حیدر کی طرف گردن موڑی اور دوبارہ سے اپنے ہونٹ اسکے ہونٹوں پر رکھ دیے اور اسکے دونوں ہاتھ پکڑ کر اپنے مموں پر رکھ دیے۔ حیدر کے ہاتھوں نے جیسے ہی میرے مموں کی نرمی کو محسوس کیا تو اسکو تو جیسے ایک کرنٹ لگ گیا اور اس نے انکو زور زور سے دبانا شروع کر دیا اور بہت ہی بیتابی کے ساتھ میرے ہونٹ بھی چوسنا شروع کر دیے۔ اب اسکے ہونٹ جیسے میرے ہونٹوں کو چھیل رہے تھے اور وہ مسلسل میرے مموں کو مسل رہا تھا اپنے ہاتھوں سے۔ مجھے نیچے اپنی گانڈ پر اسکے لن کا دباو محسوس ہو رہا تھا۔ جب حیدر میرے ممے زیادہ ہی دور سے دباتا تو درد کی شدت سے میں اپنی گانڈ اوپر ہوا میں اٹھا لیتی اور میرا جسم اکڑ جاتا۔ وہ میرے مموں کو اور زور سے دبا کر مجھے دوبارہ سے اپنی گود میں بیٹھنے پر مجبور کر دیتا۔ 2 منٹ یہ کھیل جاری رہا۔ اب میں پھر اسکی گود سے اتری اور اسکی طرف منہ کر کے پھر سے اپنے ہونٹ اسکے ہونٹوں سے ملادیے اور ساتھ ہی اسکی شرٹ کے بٹن کھولنے لگی۔ سارے بٹن کھول کے میں نے اسکی شرٹ اتار دی اور اسکو دھکا دیکر بیڈ پر لٹا دیا۔ اب میں اسکے اوپر جھک کر اسکے سینے پر پیار کرنے لگی۔ اسکا سینہ بالوں سے صاف تھا اور میں اپنی زبان سے اسکا سینہ چاٹ رہی تھی۔ کبھی اسکے نپلز پر اپنی زبان پھیرتی تو کبھی اسکا سینہ چاٹنے لگتی۔ اس نے بھی میرا اپر کمر سے اوپر کر دیا اور اپنے ہاتھ میری کمر پر مسلنے لگا۔ کچھ ہی دیر بعد اس نے میرا اپر بھی اتار دیا۔ اب میرے بڑے بڑے ممے اسکے سامنے برا میں قید تھے۔ اسنے مجھے اپنے اوپر سے ہٹایا اور مجھے بیڈ پر لٹا کر خود میرے اوپر آگیا۔

میرے اوپر آتے ہی اس نے پہلے تو اپنے ہونٹ میرے ہونٹوں پر رکھ کر چوسنا شروع کیے اور ساتھ میں اپنے دونوں ہاتھوں سے میرے مموں کو برا کے اوپر سے ہی دبانے لگا۔ پھر وہ میرے ہونٹوں کو چھوڑ کر میرے سینے پر زبان پھیرنے لگا اور وہاں سے ہوتا ہوا اب اسکی زبان میری کلیوج کی گہرائی میں داخل ہوکر گویا میری کلیوج کی چدائی کر رہی تھی۔ حیدر بڑی شدت سے میری کلیوج کو چاٹ رہا تھا اور دونوں ہاتھ سے میرے مموں کو دبا بھی رہا تھا۔ اسنے میرا برا اتارنے کی کوشش کی تو میں نے منع کر دیا کہ نہیں ابھی نہیں۔ پھر وہ مزید میرے ممے برا کے اوپر سے ہی چوسنے لگا اور مموں سے ہوتا ہوا وہ نیچے آنے لگا۔ ناف پر زبان پھیرنے کے بعد وہ مزید نیچے آیا اور ٹانگوں اور پیٹ کے ملاپ والی جگہ پر اپنی زبان پھیرنے لگا۔ مجھے حیدر کا اسطرح میرے جسم کو چاٹنا بہت اچھا لگ ر ہا تھا۔ اب اس نے میرے ٹراوذر کو پکڑا اور ایک ہی جھٹکے میں میرا ٹراوزر بھی اتار دیا۔ میں اب حیدر کے سامنے ننگی لیٹی تھی، میرے جسم پر محض ایک برا اور ایک جی سٹرنگ پینٹی تھی۔ اب وہ اپنے ہاتھ میری تھائیز پر پھیر رہا تھا اور انہیں دبا دبا کر خوش ہورہا تھا۔ بالوں سے پاک نرم اور ملائم تھائیز پر ہاتھ پھیرنے کے بعد اب اسنے میری تھائیز کو زبان سے چاٹنا شروع کر دا جس سے مجھے عجیب گدگدی سی ہونے لگی۔ وہ میری چوت کے بالکل قریب اپنا ہاتھ پھیر رہا تھا اور زبان میری تھائز پر مسلسل نیچے سے اوپر کی طرف پھیر رہا تھا۔ میری چوت گیلی ہو رہی تھی اور یہ گیلا پن پینٹی کو بھی گیلا کر چکا تھا۔

اب حیدر نے میری ٹانگیں اٹھائیں اور فولڈ کر کے میرے سینے کے ساتھ لگا دیں۔ میری گانڈ اوپر اٹھ چکی تھی۔ میرے چوتڑوں پر بھرا بھرا گوشت دیکھ کر حیدر کے منہ میں پانی آنے لگا اور وہ فورا میرے چوتڑوں کے اوپر جھک کر ان پر اپنی زبان پھیرنے لگا۔ میرے مکمل چوتڑ ننگے تھے اور دودھ کی طرح سفید تھے۔ جی سٹرنگ پینٹی کی بیک سائڈ محض اتنی ہوتی ہے کہ وہ چوتڑوں کی لائن میں جا کر گانڈ کے سوراخ کو ڈھانپ سکے۔ اسکے علاوہ تمام چوتڑ ننگے ہوتے ہیں اور حیدر اسکا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے میرے چوتڑ چاٹ رہا تھا، آہستہ آہستہ اسکی زبان چوتڑوں کے گوشت سے ہوتی ہوئی گانڈ والی لائن میں جانے لگی۔ تھوڑی دیر اس نے گانڈ والی لائن میں اپنی زبان پھیری جس نے میری چوت کو اور بھی گیلا کر دیا ۔

اب حیدر نے میری پینٹی اتارنی چاہی تو میں نے اسے منع کر دیا اور کہا وہ نیچے لیٹے۔ وہ نیچے لیٹ گیا تو میں نے اوپر آکر اسکا ٹراوزر اتار دیا۔ اب وہ بھی میرے سامنے ننگا تھا محض انڈر وئیر پہنا ہوا تھا۔ انڈر وئیر میں اسکے لن کا ابھار کافی واضح تھا۔ میں نے اپنا ہاتھ اسکے لن کے اوپر رکھا اور اسکا سائز ماپنے کی کوشش کی۔ اسکا لن چھوٹا تھا شاید 5 انچ سے کچھ زیادہ ہوگا۔ یا پھر 6 انچ کا ہوگا مگر اس سے زیادہ نہیں تھا۔ اب میں اسکے لن کے اوپر بیٹھ گئی اور اپنی گانڈ پر اسکے لن کو محسوس کرنے لگی۔ اسکا لن میری چوت سے ٹکرا رہا تھا جس نے میرے شہوت میں اور بھی اضافہ کر دیا۔ اب میں نے اسکے اوپر بیٹھے بیٹھے ہی اپنے ہاتھ کمر پر لیجا کر اپنے برا کی ہک کھول دی اور اپنے مموں کو برا کی قید سے آزاد کر دیا۔ میرے ممے برا کی قید سے نکلتے ہی حیدر کی آنکھوں کے سامنے اچھلنے لگے۔ میں آہستہ آہستہ اسکے لن پر اچھل رہی تھی جسکی وجہ سے میرے 34 سائز کے ممے میرے سینے پر لہرانے لگے۔ انکو دیکھ کر حیدر کی تو رال ٹپکنے لگی اور اس اب حیدر سے مزید نہ رہا گیا اور اسنے فورا ہی مجھے کمر سے پکڑ کر اپنے اوپر گرا لیا۔ اور میرے ممے اپنے منہ میں لے کر چوسنے لگا۔ اسنے میرے دونوں ممے اپنے دونوں ہاتھوں سے پکڑے ہوئے تھے اور ایک مما منہ میں لیکر چوس رہا تھا۔ وہ تھوڑی تھوڑی دیر بعد مما چینج کر کے اپنے منہ میں لیتا اور اسکو چوسنے لگتا۔ حیدر کا بس نہیں چل رہا تھا کہ وہ پورے کا پورا مما اپنے منہ میں لیکر کھا جائے۔ وہ زیادہ سے زیادہ حصہ منہ میں لینے کی کوشش کر ررہا تھا۔ تھوڑی دیر میں نے اسکو ایسیے ہی ممے چوسنے دیے۔ پھر میں نے اسے کہا کہ میرے نپل بھی منہ میں لیکر انکو کاٹے اور انکو چوسے۔ اسنے فورا ہی میرے نپل کو منہ میں لے لیا اور اسکو ایسے چوسنے لگا جیسے بچہ اپنی ماں کے سینے سے دودھ پیتا ہے۔ میرے نپل مکمل تنے ہوئے تھے۔ اور حیدر مسلسل اسکو اپنے منہ میں لیکر چوس رہا تھا۔ وہ کبھی نپل کو چوستا تو کبھی انکو اپنے دانتوں سے ہلکے ہلکے کاٹتا تو کبھی اپنی زبان پھیرتا میرے نپلز پر۔ میرے منہ سے مسلسل اف اف اف۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔ آہ آہ آہ آہ۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔ کی سسکیاں نکل رہی تھیں مگر میری آواز دھیمی تھی کیونکہ یہ ہوٹل کا کمرہ تھا اور آواز باہر جانے کا خطرہ تھا۔

جب حیدر نے دل بھر کر میرے ممے چوس لیے تو میں دوبارہ سے اسکے اوپر بیٹھ گئی۔ اسکا لن میری گانڈ کی لائن میں مجھے محسوس ہورہا تھا۔ اب میں نے اسکے لن کے اوپر مچلنا شروع کر دیا۔ میں اسکے لن پر مسلسل اپنی گانڈ کو گھما گھما کر مزے لے رہی تھی اور حیدر میرے اچھلتے ہوئے ممے دیکھ دیکھ کر خوش ہورہا تھا۔ ساتھ ساتھ اسکی ہلکی ہلکی سسکیاں بھی نکل رہی تھیں۔ میں مسلسل اسکے لن پر اچھل رہی تھی اور اپنی گانڈ کو اسکے لن پر گول گول گھما رہی تھی، اچانک حیدر کا جسم اکڑنے لگا اور اسکے جسم کو جھٹکے لگنے لگے۔ اور مجھے نیچے سے اپنی گانڈ گیلی محسوس ہوئی۔ میں نے اٹھ کر دیکھا تو حیدر کا انڈر وئیر گیلا تھا اور اسکی منی نکل چکی تھی۔ یہ دیکھ کر میری ہنسی نکل گئی اور میں نے بے تحاشہ ہنسنا شروع کر دیا۔ میں مسلسل ہنس رہی تھی اور حیدر تھوڑا شرمندہ تھا۔ میں نے اسے کہا کیسے مرد ہو یار تم ابھی تو تمہارا لن باہر بھی نہیں نکالا اور اس نے پانی بھی چھوڑ دیا۔۔۔ اس سے کوئی بات نہیں ہورہی تھی بس چہرے سے شرمندگی ٹپک رہی تھی۔ پھر میں نے اسے حوصلہ دیا کہ کوئی بات نہیں تم نے کبھی کسی لڑکی کی چودائی نہیں کی تو ہوجاتا ہے ایسے۔ ابھی دوبارہ کھڑا ہوجائے گا۔ یہ کہ کر میں خود لیٹ گئی اور اسکو کہا تم نے فرمائش کی تھی چوت کے بال صاف کرنے کی اب چوت نہیں دیکھو گے میری؟

میری یہ بات سن کر وہ فورا اٹھا، سب سے پہلے اس نے اپنا انڈر وئیر اتار کر سائیڈ پر پھینکا نیچے اسکا چھوٹا سا لن تھا جو پانی چھوڑنے کے بعد سُکڑ گیا تھا اور اب 2 انچ کا رہ گیا تھا۔ اسکو حیدر نے پاس پڑے ٹشو پیپر کے ڈبے سے ٹشو نکال کر صاف کیا اور پھر میری ٹانگوں کے درمیان میں آکر میری چوت پر پینٹی کے اوپر سے ہی ہاتھ پھیرنا شروع کر دیا۔ میری چوت ایک بار پھر سے گیلی ہونے لگی، حیدر نے پینٹی اتارے بغیر ہی اپنا منہ میری چوت پر رکھ دیا اور پینٹی کے اوپر سے ہی میری چوت چاٹنے لگا۔ اب میری سسکیاں تیز ہوگئیں تھیں اور میں چاہنے کے باوجود بھی اپنی آواز نیچی رکھنے میں ناکام تھی۔ کچھ دیر ایسے ہی میری چوت چاٹنے کے بعد حیدر نے میری پینٹی اتار دی۔ نیچے اس میری بالوں سے پاک صاف ستھری پھدی نظر آئی۔ وہ شکاری نظروں سے میری پھدی پر نظریں جمائے بیٹھا تھا اور پھر آہستہ آہستہ جھکتا گیا اور اپنی زبان میری پھدی سے کچھ اوپر پھیرنےلگا جس سے میرے جسم میں جھر جھری سی آئیاور میری سسکیاں اور تیز ہوگئیں۔ میں نے اسکو سر سے پکڑ کر اپنی پھدی کے اوپر دبانا شروع کر دیا۔ پھر حیدر نے اپنی زبان نیچے کی اور میری پھدی کے لبوں پر زبان پھیرنے لگا اب میری پھدی مکمل طور پر گیلی تھی اور مسلسل سسکیوں سے کمرہ گونج رہا تھا۔ کچھ دیر پھدی کے لبوں کو چوسنے کے بعد حیدر نے اپنی زبان میری چوت کے اندر داخل کر دی اور اپنی زبان سے میری چوت چاٹنے لگا۔ میں پاگل ہورہی تھی اور بری طرح مچل رہی تھی۔ میں نے اپنی دونوں ٹانگیں فولڈ کی ہوئی تھیں اور میری ٹانگوں کے درمیان حیدر کا سر تھا اور زبان مسلسل میری پھدی کی چدائی میں مصروف تھی۔ کچھ دیر مزید پھدی کی چدائی کے بعد اس نے میری ٹانگیں اوپر اٹھا کر فولڈ کیں اور سینے سے لگا دیں۔ اور میرے چوتڑون والی لائن میں اپنی زبان پھیرنے لگا۔ یہ پہلی بار ہوا تھا کہ کوئی لڑکا میری گانڈ چاٹ رہا تھا اپنی زبان سے۔ اس نے اپنی زبان کی نوک میری گانڈ کے سوراخ پر رکھی اور اس پر زور زور سے ٹکرانے لگا۔ یہ بالکل نیا احساس تھا میرے لیے۔ میری چوت سے شہوت کا پانی بہہ رہا تھا اور میری سسکیاں تھیں کے رکنے کا نام نہیں لے رہی تھیں۔ ایسے تو رضوان نے بھی چوت نہیں چاٹی تھی جیسے حیدر چاٹ رہا تھا اور ساتھ میں وہ گانڈ کو بھی چاٹ رہا تھا۔ کچھ دیر گانڈ چاٹنے کے بعد حیدر دوبارہ سے میری چوت میں زبان پھیرنے لگا۔ اب اسکی زبان بہت تیزی کے ساتھ میری چوت کی چدائی کر رہی تھی اورمیری برداشت جواب دے رہی تھی۔ کچھ دیر مزید زبان کی چدائی کے بعد میری ہمت جواب دے گئی اور چند جھٹکوں کے ساتھ ہی میری چوت نے پانی چھوڑ دیا۔

اب میں حیدر کے نیچے سے نکلی تو اسکا لن دوبارہ سے تھوڑا سخت ہو چکا تھا۔ میں نے اسکو نیچے لٹایا اور اسکا لن منہ میں لیکر چوسنے لگی۔ میرے منہ کی گرمی کو پاکر حیدر کے لن میں اور سختی آنے لگی اور اسکی لمبائی میں بھی اضافہ ہونے لگا۔ کچھ ہی دیر چوسنے کے بعد اسکا لن 5 سے 6 انچ تک لمبا ہو چکا تھا اور اسکی سختی دوبارہ سے واپس آ چکی تھی۔ میں اپنے ہاتھ سے اسکے لن کو مسل بھی رہی تھی اور اسکی ٹوپی کو منہ میں لیکر چوس بھی رہی تھی۔ میں نے اسکے لن کی ٹوپی پر تھوڑا سا تھوک بھی پھینکا اور اسکو اپنے ہاتھوں سے اسکے پورے لن پر مسل دیا اور پھر سے اسکا لن منہ میں لیکر چوسنے لگی۔ اب اسکا پورا لن میرے منہ میں تھا اور میں اسکو مسلسل اندر باہر کر رہی تھی۔ لن منہ میں اندر باہر کرنے کے ساتھ ساتھ میری زبان بھی لن کا مساج کرنے میں مصروف تھی۔ ابھی لن چوستے ہوئے مجھے 3 منٹ ہی ہوئے ہونگے کہ حیدر کے لن نے ایک بار پھر سے منی چھوڑ دی۔ اسکی ساری منی میرے منہ میں ہی نکل گئی۔ اس بات پر مجھے بے تحاشہ غصہ آیا۔ وجہ یہ نہیں تھی کہ میرے منہ میں منی کیوں نکالی بلکہ غصے کی وجہ یہ تھی کہ دوسری بار اس نے بہت جلدی منی چھوڑ دی تھی۔ میں ابھی اسکے لن کو اپنی چوت میں ڈالنے کا سوچ ہی رہی تھی کہ اسکے لن نے منی چھوڑ دی۔

میں نے حیدر کی طرف غصے سے دیکھا اور پوچھا یہ کیا ہے؟ دوسری بار بھی تم اتنی جلدی فارغ ہوگئے۔ تو حیدر نے کہا معلوم نہیں کیا ہورہا ہے مٹھ مارتے ہوئے تو 6، 7 منٹ مسلسل مٹھ مار لیتا ہوں اسکے بعد ہی منی نکلتی ہے۔ آج بہت جلدی نکل رہی ہے۔۔ میں نے اسے غصے سے کہا اب اسکوجلدی کھڑا کرو اور میری چوت میں داخل کرو۔ حیدر شرمندہ ہوکر واش روم گیا۔ وہاں جا کر اسنے اپنے لن کو دھویا اور پھر میں نے جا کر کلی کی اور اپنا منہ صاف کیا۔ حیدر کا لن اب پھر سے سُکڑ کر 2 انچ کا ہوچکا تھا جسکو حیدر مسلسل ہاتھ میں پکڑ کر کھڑا کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ اور میں مسلسل غصے میں اسکی طرف دیکھ رہی تھی۔ 2، 3 منٹ تک انتظار کرنے کے باوجود جب اسکا لن کھڑا نہیں ہوا تو میں لیٹ گئی اور اسکو کہا دوبارہ سے میری چوت کو اپنی زبان سے چاٹے شاید تھوڑا ٹائم گزرنے کے بعد لن کھڑا ہوجائے۔

میری چوت اب بالکل خشک ہو چکی تھی، حیدر نے میری ٹانگیں کھول کر دوبارہ سے میری چوت پر اپنی زبان پھیرنی شروع کی تو آہستہ آہستہ میری چوت کا گیلا پن واپس آنے لگا اور میرا جسم ایک بار پھر سے گرم ہونا شروع ہوگیا۔ اس بار حیدر اور بھی زیادہ شدت کے ساتھ میری چوت کو چاٹ رہا تھا۔ اب میں مکلمل طور پر گرم ہوچکی تھی اور اب میری چوت تیار تھی لن لینے کے لی۔ حیدر نے اب پیچھے ہٹ کر دوبارہ سے اپنا لن ہاتھ میں پکڑ لیا اور اسکو جھٹکےمارنے لگا۔ اب اسکا لن آہستہ آہستہ کھڑا ہو رہا تھا۔ دیکھتے ہی دیکھتے اسکا لن مکمل طور پر کھڑا ہوگیا تو میری جان میں جان آئی۔ میں نے اسکو کہا اب میری ٹانگیں اٹھائے اور اپنا لن داخل کر دے میری چوت میں۔

حیدر نے میری ٹانگیں اٹھائیں اور آگے بڑھ کر اپنے لن کی ٹوپی میری چوت پر سیٹ کی اور ایک دھکا لگایا۔ میری چیخ نکل گئی کیونکہ میری پھدی ابھی اتنی کھلی نہیں ہوئی تھی کہ اتنی آسانی سے لن اندر جا سکے۔ میں نے اسکو کہا کہ آرام آرام سے داخل کرو۔ اب حیدر نے آہستہ آہستہ اپنے لن کا پریشر میری پھدی پر بڑھایا تو لن اندر جانے لگا۔ اور مجھے درد بھی شروع ہوگئی تھی۔ کچھ دیر زور لگانے کے بعد حیدر کا پورا لن میری چوت میں داخل ہو چکا تھا۔ اور اسکے چہرے پر خوشی تھی کہ آخر کار اسنے میری چوت حاصل کر لی تھی۔ کچھ دیر لن اندر رہنے کے بعد میں نے اسے کہا کہ اب آہستہ آہستہ دھکے مارنے شروع کرے تو حیدر نے میری چودائی شروع کر دی۔ اسکے دھکوں سے میرے ممے ہلنے لگے تو اسنے میرے اوپر جھک کر ممے چوسنے شروع کر دیے اور نیچے سے اپنے دھکے جاری رکھے۔ اب میری چوت مکمل طور پر گیلی ہو چکی تھی اور حیدر کا لن بڑے آرام کے ساتھ میری چودائی کر رہا تھا۔ میں نے حیدر کو کہا کہ اب اپنے لن کی سپیڈ تھوڑی بڑھاو۔ حیدر جیسے اسی بات کے انتظار میں تھا۔ میری بات سنتے ہی اسنے ایک دم سے زور دار دھکے لگانے شروع کر دیے۔

مگر اسکے یہ زور دار دھکے ابھی محض 5، 6 ہی لگے تھے کہ اسکے جسم کو جھٹکے لگے اور اسکے لن نے ایک بار پھر سے منی چھوڑ دی۔ اب تو جیسے میرا سارا صبر جواب دے گیا۔ میں نے اسکو پیچھے دھکا دیا اور ایک بڑی ساری گالی دی۔ اور کہا کہ شوق تمہیں چوت لینے کے ہیں اور لن تمہارا 2 منٹ سے زیادہ چدائی نہیں کر سکتا۔ اب میرا موڈ بری طرح خراب ہوچکا تھا۔ حیدر کا لن 3 بار پانی چھوڑ چکا تھا جبکہ میری چوت ابھی محض ایک بار ہی پانی چھوڑ سکی تھی۔

میں بستر سے اٹھی ٹشو اٹھا کر اپنی چوت کو صاف کیا اور کپڑے پہننے لگی۔ حیدر چپ چاپ بیڈ پر بیٹھا تھا اور مجھ سے نظریں نہیں ملا رہا تھا جبکہ میں غصے سے اسے گھور رہی تھی۔ کپڑے پہننے کے بعد میں نے پانی پیا، اپنا بیگ اٹھایا اور اسکو پھر سے ایک گالی دی اور نا مردی کا طعنہ دیتے ہوئے کمرے سے باہر نکل آئی اور تیز تیز قدموں کے ساتھ ہوٹل کے گیٹ پر آگئی۔ اب میں روڈ پر کھڑی تھی اور غصہ میرا اچھا خاصا تھا، مگر میری چوت کو ابھی بھی لن چاہیے تھا۔

اور مجھے اس وقت بہت شدت کے ساتھ کسی اصل مرد کے طاقتور لن کی ضرورت تھی ۔ بالاآخر میں نے فون نکالا اور رضوان کو کال کر کے پوچھا کہ وہ کہاں پر ہے؟ اس نے پوچھا خیریت ہے بہت غصے میں لگ رہی ہو۔ اسکی یہ بات سن کر میں نے ایک گہرا سانس لیا اور اپنے آپ کو نارمل کرتے ہوئے کہا کہ کچھ نہیں غصے میں نہیں ہوں مگر اس وقت تم سے ملنا چاہتی ہوں۔ رضوان نے پھر پوچھا کہ تم ہو کہاں؟ تو میں نے بتایا کہ میں سائرہ کے گھر گئی تھی اور سوئمنگ کی تو مجھے وہی وقت یاد آگیا جب تم میری چدائی کر رہے تھے۔ اور اب میری چوت گیلی ہو رہی ہے میں شہر میں آچکی ہوں اور تم جیسے بھی ہو ایک بار مل لو میرے سے۔ یہ بات سن کر وہ ہنسا اور کہا واہ کیا بات ہے۔ اس نے مجھے بتایا کو وہ علی کے گھر ہے۔ وہی علی جسکے گھر وہ مجھے ایک بار پہلے پارٹی پر لے گیا تھا۔ رضوان نے مجھے کہا کہ یہاں اور لوگ بھی آئے ہوئے ہیں تم بھی یہیں پر آجاو۔ میں نے فون بند کیا اور ایک رکشہ روک کر اسکو ایڈریس بتا کر رکشے میں بیٹھ گئی۔ رکشے میں بیٹھ کر میں نے موبائل واپس بیگ میں ڈالا تو میری نظر خفیہ کیمرے پر پڑی میں نے کیمرے کی ریکارڈنگ بند کی اور پین کو محفوظ جگہ پر بیگ کے اندر والی جیب میں رکھ دیا۔ اب میرا رخ علی کے گھر کی طرف تھا اور میں اس وقت رضوان کے لن کے لیے بیتاب ہوئی جا رہی تھی۔

جاری ہے۔
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
  #69  
Old 11-19-2015, 07:26 PM
goldfish goldfish is offline
Senior Member
 
Join Date: Dec 2007
Posts: 282,110
Default سالی: پورے گھر والی

nice keep it up
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!
  #70  
Old 11-19-2015, 07:26 PM
kaamdev kaamdev is offline
Senior Member
 
Join Date: Jan 2012
Posts: 222,998
Default سالی: پورے گھر والی

ak bar phir kafi achi update hai app ke nice one keep it up
Reply With Quote
Sponsored Links
CLICK HERE TO DOWNLOAD INDIAN MASALA VIDEOS n MASALA CLIPS
Sponsored Links - Indian Masala Movies
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
UKBL ~ 10 Second Banner Rotator

"Uncensored Indian Masala Movies" - The hottest Indian Sex Movies and Mallu Masala clips

Check out beautiful Indian actress in sexy and even TOPLESS poses

Indian XXX Movies!

Widest range of Indian Adult Movies of shy, authentic Desi women.....FULLY NUDE DESI MASALA VIDEOS!!! Click here to visit now!!!

 

UKBL ~ 10 Second Banner Rotator
Sponsored Links
Reply

Thread Tools
Display Modes

Posting Rules
You may not post new threads
You may not post replies
You may not post attachments
You may not edit your posts

BB code is On
Smilies are On
[IMG] code is On
HTML code is Off

Forum Jump


All times are GMT -4. The time now is 01:59 PM.


Powered by vBulletin® Version 3.8.3
Copyright ©2000 - 2018, Jelsoft Enterprises Ltd.

Masala Clips

Nude Indian Actress Masala Clips

Hot Masala Videos

Indian Hardcore xxx Adult Videos

Indian Masala Videos

Uncensored Mallu & Bollywood Sex

Indian Masala Sex Porn

Indian Sex Movies, Desi xxx Sex Videos

Disclaimer: HotMasalaBoard.com DOES NOT claim any responsibility to links to any pictures or videos posted by its members. HotMasalaBoard has a strict policy regarding posting copyrighted videos. If you believe that a member has posted a copyrighted picture / video, please contact Hotman super moderator. Members are also advised not to post any clandestinely shot material.